کوٹ ادو: والد کا بیٹی کے گھر دھاوا، ڈنڈوں کے ذریعے وحشیانہ تشدد

  کوٹ ادو: والد کا بیٹی کے گھر دھاوا، ڈنڈوں کے ذریعے وحشیانہ تشدد

  

کوٹ ادو (تحصیل رپورٹر)والدنے ساتھیوں کے ہمراہ شادی شدہ بیٹی کے گھر دھاوابول دیا،گلہ دباکر قتل کرنے کی کوشش کی گئی دوپٹے سے ٹانگیں باندھ کر پلاسٹک کے پائپوں سے تشدد بھی کرتے رہے، تفصیل کے مطابق تھانہ دائرہ دین پناہ کے علاقہ موضع ٹبہ غیر مستقل شرقی غلام یٰسین کھیانرہ کی بیٹی ثمرین بی بی کی شادی عمران حیدر سے ہوئی تھی جس سے ثمرین کے بچے بھی تھے،عمران حیدر جوکہ مزدور ی کے سلسلہ میں کراچی میں مقیم تھا کہ گزشتہ روز ثمرین کے والد غلام یٰسین نے اپنے دیگر ساتھیوں نعمان،ذیشان مسماۃ سائرہ دختر بشیر احمد کے ہمراہ ثمرین کے گھر داخل ہو(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

گئے اور ثمرین کی گھر میں 8ماہ کے بچے کو گود سے باہر پھینک دیا،اور ڈنڈے سوٹے جن پر پلاسٹک کے پائپ چڑھے ہوئے تھے اس سے تشدد کیا بعدازاں غلام یٰسین نے ثمرین کا گلہ دبا کر اسے قتل کرنے کی کوشش کی اورثمرین کے دوپٹے سے اس کی ٹانگیں باندھ کر اس پرپلاسٹک کے پائپوں سے وحشیانہ تشدد کیا جبکہ اس کے بچے ایک کمرہ میں بند کردیے، بعدازاں ثمرین کا موبائل ٹیب مالیتی8ہزار اور اس کا موبائل فون اینٹوں سے توڑ دیا اور گھر میں رکھی قیمتی دستاویزات لیکر باہر تالا لگا کر فرارہوگئے،دوسرے روز متاثرہ کی والدہ کی رپورٹ پر پولیس نے تالا توڑکر خاتون کو برآمد کرکے اسے ہسپتال داخل کرادیا،پولیس دائرہ دین پناہ نے متاثرہ ثمرین بی بی کی مدعیت میں والد غلام یٰسین کھیانرہ سمیت اس کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ نمبر229/20زیر دفعہ379-342-354-452درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کردی ہے۔

تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -