نشتر: بائیو سیفٹی تھری لیبارٹری مطلوبہ نتائج دینے سے قاصر، اداروں میں رابطے کافقدان

  نشتر: بائیو سیفٹی تھری لیبارٹری مطلوبہ نتائج دینے سے قاصر، اداروں میں ...

  

ملتان(نمائندہ خصوصی) کورونا ٹیسٹنگ میں اضافے کو مدنظر رکھتے ہوئے محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے نشتر ہسپتال کی ٹی بی یونٹ لیبارٹری کو اپ گریڈ کر کے بائیو سیفٹی لیول (بقیہ نمبر18صفحہ6پر)

تھری لیبارٹری کا درجہ دیا گیا تاہم ایک ماہ سے زائد گزرنے پر بھی سٹاف کی کمی اور ٹیکینیکل عملے کی کمی کی وھہ سے لیبارٹری مطلوبہ نتائج دینے میں ناکام ہے،ارٹری سربراہان اور محکمہ صحت ملتان کے درمیان رابطے کا شدید فقدان ہے جس کے باعث کورونا مریضوں کی رپورٹنگ اور ری سیمپلنگ میں شدید مسائل کا سامنا ہے,ذرائع کے مطابق محکمہ صحت پنجاب کی عدم توجہی کی وجہ سے لیبارٹری کو کٹس کی کمی سٹاف کی کمی کا سامنا ہے،جبکہ عملہ اکثر نمونے مکس کر دیتا ہے جس کی وجہ سے ری سیمپلنگ درکار ہوتی ہے جبکہ لیبارٹری عملے کی جانب سے مریضوں کو کورونا کی تحریری رپورٹ جاری نہیں کی جا رہی مشتبہ مریض اور کورونا کے وہ کنفرم مریض جن کا دوبارہ ٹیسٹ کیا جانا مقصود تھا ان کو 4 سے 5روز گزر جانے پر بھی تحریری رپورٹ جاری کرنے کی بجائے زبانی کورونا ٹیسٹ کا رزلٹ کا بتایا جا رہا ہے جبکہ ادھر محکمہ صحت کی ٹیمیں جب کورونا مریضوں کے گھر دوبارہ سیمپلنگ کے لئے پہنچتی ہیں تو تحریری رپورٹ نہ ہونے کے باعث سیمپلنگ نہیں کی جاتی جس کے باعث اس وقت 250 سے زائد افراد دوبارہ ٹیسٹ کروانے کیلئے انتظار کی سولی پر لٹکے ہوئے ہیں،اس حوالے سے دو روز قبل صوبائی محکمہ انٹیلیجنس نے ملتان ریجن میں کورونا لیبارٹری ٹیسٹنگ کی رپورٹ میں تاخیر کی بھی نشاندہی کی ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -