کورونا لاک ڈاﺅن کے دوران نیا کام شروع ہوگیا، آن لائن جنسی ہراسانی کی شکایات میں اتنا اضافہ کہ آپ کے بھی ہاتھوں کے طوطے اڑ جائیں گے

کورونا لاک ڈاﺅن کے دوران نیا کام شروع ہوگیا، آن لائن جنسی ہراسانی کی شکایات ...
کورونا لاک ڈاﺅن کے دوران نیا کام شروع ہوگیا، آن لائن جنسی ہراسانی کی شکایات میں اتنا اضافہ کہ آپ کے بھی ہاتھوں کے طوطے اڑ جائیں گے

  

کراچی (ویب ڈیسک) ڈیجیٹل رائٹس فاﺅنڈیشن کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے پاکستان میں ملک گیر لاک ڈاﺅن کے دوران ان کی سائبر ہراسمنٹ ہیلپ لائن پر شکایات میں 189 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

غیر سرکاری تنظیم کی جانب سے جاری بیان کے مطابق کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کے بعد پاکستان میں لاک ڈاﺅن کا آغاز مارچ میں ہوا، جس کے بعد ہمیں خدشہ تھا کہ آن لائن ہراسانی کے کیسز میں بالخصوص اور سائبر حملوں میں بالعموم اضافہ ہوگا۔ملک میں ڈیجیٹل آزادی کے لیے کام کرنے والی تنظیم نے کہا کہ اسے مارچ اور اپریل میں لاک ڈاﺅن کے دوران سائبر ہراسانی کی کل 136 شکایتیں موصول ہوئیں جو جنوری اور فروری کے مقابلے میں 189 فیصد زائد ہیں۔لاک ڈاﺅن سے قبل تنظیم کو جنوری اور فروری میں اور آن لائن ہراسانی کی 47 شکایتیں موصول ہوئی تھیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -