شہبازشریف کا عمران خان کے خلاف ہرجانے کا دعویٰ ، عدالت فیصلہ کب سنائے گی ؟ بڑا دعویٰ سامنے آ گیا

شہبازشریف کا عمران خان کے خلاف ہرجانے کا دعویٰ ، عدالت فیصلہ کب سنائے گی ؟ ...
شہبازشریف کا عمران خان کے خلاف ہرجانے کا دعویٰ ، عدالت فیصلہ کب سنائے گی ؟ بڑا دعویٰ سامنے آ گیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )مریم اورنگزیب نے بیان جاری کرتے ہوئے کہاہے کہ ہرجانہ کیس میں عمران خان کے وکلاءنے تین سال میں 33 بار مہلت مانگی ، آج تک ہرجانہ کیس میں عمران خان یا ان کے وکیل پیش نہیں ہوئے ، ہرجانہ کیس کا فیصلہ تین ماہ میں آنا ہوتا ہے ،آج جج صاحب نے لکھ دیاہے کہ 22 جون تک فیصلہ ہو جائے گا۔

مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگریب نے بیان جاری کرتے ہوئے کہاہے کہ عمران خان نے کنٹینر پر چڑھ کر شہباز شریف پر الزام لگایا تھا کہ پاناما پر بات نہ کرنے پر 10 ارب روپے کی پیشکش کی ، مئی 2017 میں شہبازشریف نے عمران خان پر ہرجانے کا دعویٰ کیا ،عدالت نے جواب مانگا کہ ثبوت دیں کہ 10 ارب کی پیشکش کس سے ہوئی ، ان کے وکلاءنے عدالت سے تین سال میں 33 بار مہلت مانگی ،آج تک ہرجانہ کیس میں عمران خان یا ان کے وکیل پیش نہیں ہوئے ۔

تفصیلات کے مطابق مریم اورنگزیب کاکہنا تھا کہ آج کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث بابر اعوان پیش نہیں ہو سکتے ، کل کورونا وائرس کے باوجود شہبازشریف اور عوام کو خطرے میں ڈالا گیا ،بابر اعوان نے آج اس کیس میں پیش ہونا تھا ،شہبازشریف کی ہرروز پیشی ہوتی ہے ،لیگی قیادت کو خطرے میں ڈالاجاتا ہاے ، خودیہ اب جواب نہیں دیتے۔

ان کا کہناتھا کہ بابراعوان بطور وکیل عمران خان کے کیس میں پیش نہیں ہو سکتے ،بابراعوان کس حیثیت سے عمران خان کے وکیل ہیں ،ہرجانہ کیس کا فیصلہ تین ماہ میں آنا ہوتا ہے ،آج جج صاحب نے لکھ دیاہے کہ 22 جون تک فیصلہ ہو جائے گا۔

مریم اورنگریب نے پی ٹی آئی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ عادی جھوٹے اور چینی چور ہیں ،حکومت شہبازشریف کے خوف میں مبتلا ہے ،عمران خان نے تین سال میں جواب اس لیے جمع نہیں کروایا کیونکہ یہ الزام جھوٹا ہے ، عمران خان نے نہیں بتایا کہ کب ، کیوں اور کیسے 10 ارب دینے کا کہا گیا ۔

مزید :

قومی -