”پی ایس ایل مالی بحران کا شکار ہو گئی ہے اور مالکان ٹیمیں بیچنے کا سوچ رہے ہیں لیکن میں اسے بچا سکتا ہوں۔۔۔“ شعیب اختر نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

”پی ایس ایل مالی بحران کا شکار ہو گئی ہے اور مالکان ٹیمیں بیچنے کا سوچ رہے ...
”پی ایس ایل مالی بحران کا شکار ہو گئی ہے اور مالکان ٹیمیں بیچنے کا سوچ رہے ہیں لیکن میں اسے بچا سکتا ہوں۔۔۔“ شعیب اختر نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق فاسٹ باﺅلر شعیب اختر نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) معاشی بحران کا شکار ہو گئی ہے اور موجودہ صورتحال میں ٹیم کے مالکان اپنی ٹیمیں فروخت کرنے کا سوچ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شعیب اختر نے ایک انٹرویو میں کہاکہ آئندہ 18 ماہ تک پی ایس ایل کے مقابلے شروع ہونے کا امکان نہیں اور لیگ کو معاشی بحران کا سامنا ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورتحال میں ورلڈکپ کے انعقاد کیلئے بھی 8 ماہ تک انتظار کرناہوگا، ستمبر تک کوئی کرکٹ نہیں تو پی ایس ایل 4 ماہ میں کس طرح ہوسکتی ہے، بہت سے لوگوں یہ بات نہیں سننا چاہتے لیکن اس صورتحال میں پی ایس ایل ٹیم مالکان اپنی ٹیمیں فروخت کرنے کا سوچ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بورڈ موجودہ حالات میں فرنچائزز کو پیسے دینے کیلئے نہیں کہہ سکتا اور میری معلومات کے مطابق مالکان ٹیمیں بیچنے  کیلئے تیار ہیں اور اس ضمن میں پیشکش بھی موجود ہے لیکن میری خواہش اور کوشش ہو گی کہ پی ایس ایل بقاءکی جنگ جیتنے میں سرخرو ہو اور پہلے سے بڑا برانڈ بن کر سامنے آئے، لیگ کیلئے مالی اور اخلاقی سپورٹ کرنا میرے لئے بڑی خوشی کی بات ہو گی۔ 

شعیب اختر نے کہا کہ میں اس بات سے اتفاق نہیں کرتا کہ بھارت اکتوبر، نومبر میں انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) کے انعقاد کیلئے ٹی 20 ورلڈکپ ملتوی کرانے کی کوشش کررہا ہے کیونکہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی)، کرکٹ آسٹریلیا اور بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) اس ضمن میں کچھ نہیں کر سکتے، اصل فیصلہ آسٹریلین حکومت کو اپنے ملک کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے کرنا ہے،اس کی پہلی ترجیح کرکٹرز، آفیشلز اور دیگر افراد کی صحت ہوگی، وہ کسی مصلحت سے کام نہیں لیں گے۔

مزید :

کھیل -