شہبازشریف دور میں بنائی جانیوالی 56کمپنیاں آئین کے منافی نہیں: پنجاب حکومت 

شہبازشریف دور میں بنائی جانیوالی 56کمپنیاں آئین کے منافی نہیں: پنجاب حکومت 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)عثمان بزدار کی پنجاب حکومت نے لاہورہائیکورٹ میں شہباز شریف دور میں قائم 56کمپنیوں کے حق میں بیان دیدیا،شہباز شریف کے دور حکومت میں صاف پانی سمیت 56 کمپنیوں کی تشکیل کیخلاف شان سعید گھمن کی طرف سے دائر درخواست پر جسٹس عائشہ اے ملک کی عدالت میں پنجاب حکومت کی طرف سے ایڈیشنل ایڈ و وکیٹ جنرل پنجاب ملک اختر جاوید نے جواب داخل کروایا جس میں کہا گیا شہباز شریف دور حکومت کی کابینہ نے قانون کے مطابق 56 کمپنیاں بنانے کی منظوری دی لوکل گور نمنٹ ایکٹ 2013 اور کمپنیزایکٹ ایسی کمپنیاں بنانے کی اجازت دیتا ہے، یہ کمپنیاں آئین کے منافی نہیں،درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیارکیا آئین اور لوکل گور نمنٹ ایکٹ میں کمپنیز بنانے کی اجازت نہیں،درخواست گزار وکیل نے 56 کمپنیوں کے متعلق پنجاب اسمبلی کے رولز آف بزنس اور لوکل گورنمنٹ کے حوالے سے دلائل دیتے ہوئے کہا سابق دور حکومت میں صاف پانی سمیت دیگر قائم ہونیوالی 56 کمپنیوں کی کوئی قانونی حیثیت نہیں،یہ درخواست 2017 ء میں دائر کی گئی تھی جس میں درخواست گزار نے استدعاکررکھی ہے کہ صاف پانی کمپنی سمیت پنجاب حکومت کی تشکیل دی گئی56کمپنیوں کوغیر قانونی قراردیکر کالعدم کیا جائے، درخواست گزار کے وکیل کے دلائل جاری تھے کہ فاضل جج نے درخواست کی مزید سماعت ملتوی کردی۔

ہائیکورٹ

مزید :

صفحہ آخر -