بجلی کی سہولیات فراہم کرنا صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے: تاج محمد خان ترند

بجلی کی سہولیات فراہم کرنا صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے: تاج محمد خان ترند

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعظم عمران خان کی 350 ڈیمز بنانے والی ویڑن کو منی مائیکرو ہائیڈرو پاور منصوبوں کی شکل میں مکمل کرنا صوبائی حکومت کا بہت بڑا کارنامہ ہے بجلی کی نعمت سے محروم علاقوں کو بجلی کی سہولیات فراہم کرنا صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے ان خیالات کا اظہار وزیراعلی کے معاون خصوصی برائے توانائی و برقیات تاج محمد ترند نے پختونخوا انرجی ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن کے ایک اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اجلاس میں فوکل پرسن برائے توانائی ایم پی اے میاں شرافت علی، چیف ایگزیکٹو آفیسر انجنئیر محمد نعیم خان، پراجیکٹ ڈائریکٹر کرنل ریٹائرڈ شاہد خان، پراجیکٹ ڈائریکٹر خرم درانی سمیت متعدد افسران نے شرکت کی۔ معاون خصوصی تاج محمد ترند نے کہا کہ چھوٹے پن بجلی گھروں سے آف گریڈ ایریا کو بجلی کی سہولیات مہیا کرنا محکمہ توانائی کا فلیگ شپ منصوبہ ہے۔ چیف ایگزیکٹو آفیسر پیڈو انجنئیر نعیم خان نے بریفننگ دیتے ہوئے بتایا کہ فیز ون کی 356 منی مائیکرو ہائیڈرو پاور منصوبوں میں سے 309 مکمل کیے گئے ہیں اور کچھ منصوبے جون تک تک مکمل کئے جائینگے۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ قبائلی اضلاع کے بازاروں میں منی سولر گریڈ قائم کئے جارہے ہیں جن میں سے آٹھ سائیٹس کیلئے زمین حاصل کی گئی ہے جن میں سے تین منی سولر گریڈ کرم، اورکزئی اور ٹانک کو جولائی 2021 تک مکمل کئے جائینگے۔ معاون خصوصی تاج محمد ترند نے کہا کہ محکمہ توانائی کے تمام منصوبوں کو بروقت مکمل کئے جائیں تاکہ صوبے کی معاشی استحکام کا باعث بن سکے۔ بریفننگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ صوبے کے 8ہزارسکولوں،4400مساجد،187بنیادی مراکزصحت کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کے منصوبوں پر بھی تیزی سے کام جاری ہے۔ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ وہاؤس سمیت سول سیکرٹریٹ کو پہلے ہی شمسی توانائی نظام پر منتقل کیا جاچکا ہے جس سے صوبے کو سالانہ کروڑوں کی بچت ہورہی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -