بے نظیر انکم سپورٹ  پروگرام کا نام تبدیل نہیں کیا گیا: ڈاکٹر ثانیہ نشتر

بے نظیر انکم سپورٹ  پروگرام کا نام تبدیل نہیں کیا گیا: ڈاکٹر ثانیہ نشتر

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے سماجی بہبود سینیٹر ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے کہا ہے کہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل نہیں کیا گیا، بائیومیٹرک سسٹم کے ذریعے مالی معاونت فراہم کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ وسیلہ تعلیم پروگرام کو ڈیجیٹل کر دیا ہے۔ احساس کفالت، احساس وسیلہ تعلیم، احساس ایمرجنسی کیش پروگرام اور احساس نشوونما پروگرام حکومت نے عوام کی فلاح و بہبود کے لئے شروع کئے ہیں۔جمعرات کو ایوان بالا کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران ڈاکٹر ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام (بی آئی ایس پی) ایک ایکٹ کے تحت قائم ہوا تھا اور یہ آج بھی موجود ہے، اس کا نام تبدیل نہیں کیا گیا۔ عدالت کے حکم پر شخصیات کی تصاویر اس پروگرام سے ہٹائی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ وسیلہ تعلیم پروگرام کا دائرہ 50 اضلاع سے بڑھا کر 150 اضلاع تک پھیلاتے ہوئے اس سے کرپشن کا خاتمہ کیا گیا ہے۔ آؤٹ سورسنگ ماڈل بھی ہم نے ختم کر دیا ہے کیونکہ اس سے این جی اوز کو بھاری ٹھیکے دیئے جاتے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ اس کی آپریشنل لاگت بھی 8 فیصدسے کم کر کے 3 فیصد کر دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بے نظیر ڈیبٹ کارڈ کی جگہ نیا پروگرام شروع کیا گیا ہے جس سے بائیو میٹرک کے ذریعے امداد ملے گی۔

 ڈاکٹر ثانیہ نشتر

مزید :

پشاورصفحہ آخر -