مقبوضہ کشمیر قانون ساز کونسل کی 6نشستوں کے لئے انتخابات

مقبوضہ کشمیر قانون ساز کونسل کی 6نشستوں کے لئے انتخابات

  

 جموں(کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر قانون ساز کونسل کی 6نشستوں کے لئے ہوئے انتخابات میں نیشنل کانفرنس نے کانگریس اور آزاد ممبران اسمبلی کی مدد سے 2 نشستیں جیت لی ہیں جبکہ پی ڈی پی اور بی جے پی کو 2-2نشستیں ملیں ۔ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی نے جموں اور کشمیر صوبہ سے ایک ایک جبکہ بی جے پی نے جموں سے دو نشستیں جیتیں۔ کامیا ب ہونے والے امیدواروں میں پی ڈی پی کے سریندر چوہدری اور جاوید احمد مرچال، بی جے پی کے وبودھ گپتا، چرنجیت سنگھ خالصہ اور نیشنل کانفرنس کے سجاد احمد کچلو و قیصر جمشید لون شامل ہیں۔ قانو ن ساز کونسل چناو کے دوران پی ڈی پی کشمیر سے جیتی ہوئی نشست ہار گئی جبکہ نیشنل کانفرنس جوکہ جیت کی تمام امیدیں کھوچکی تھی کو آخری موقعہ پر جیت مل گئی۔ ایم ایل اے لنگیٹ انجینئر رشید نے پہلے صبح وزیر اعلی مفتی محمدسعید سے ملاقات کی تھی۔ووٹ ڈالنے کے عمل کے دوران اپنی ہار یقینی دیکھ کر این سی امیدوار قیصر جمشید لون پہلے ہی سیکریٹریٹ سے چلے گئے لیکن جب ووٹوں کی گنتی ہوئی تو اس وقت سب لوگ حیران رہ گئے جب نتائج میں این سی کے قیصر جمشید لون فاتح قرار پائے اور پی ڈی پی کے سیف الدین بھٹ ہارگئے۔ اسمبلی سیکریٹریٹ کی طرف سے مطلع کئے جانے کے بعد قیصر جمشید لون واپس سیکریٹرٹ پہنچے اور ایم ایل سی کی سرٹیفکیٹ حاصل کی۔ وادی کی دونشستوں پر این سی امیدوار سمیت مجموعی طور 3امیدوار میدان میں تھے جہاں کانٹے کی ٹکر متوقع تھی لیکن انجینئر رشید کے ڈرامائی کروٹ کی وجہ سے این سی فاتح رہی ۔یاد رہے کہ حالیہ راجیہ سبھا انتخابات میں انجینئر رشید نے کانگریس اور نیشنل کانفرنس کے مشترکہ امیدوار غلام نبی آزاد کے حق میں بھی ووٹ کا استعمال کیاتھا۔ جب وہ پی ڈی پی کے امیدوار کے ساتھ ووٹ ڈالنے پہنچے تو ہر سو انجینئر رشیدموضوع بحث بن گیا کہ انہوں نے اس مرتبہ یوٹرن لیکر پی ڈی پی کا ساتھ دیا لیکن انہوں نے ایسا طریقہ اختیار کیا کہ سب حیران رہ گئے۔کشمیر صوبہ کی تین نشستوں پر ہوئے چناو میں نامزد خواتین ممبران سمیت مجموعی طور 89ممبران نے ووٹ ڈالے جس میں سے پی ڈی پی کے جاوید احمد مرچال کو 30، این سی کے قیصر جمشید لون کو 30اور پی ڈی پی کے سیف الدین بھٹ کو 29ووٹ ملے۔اس طرح سیف الدین بٹ ہار گئے۔ صوبہ جموں سے 4نشستوں کے لئے کل 87ممبران نے ہی ووٹ ڈالے ان میں بھاجپاکے چرنجیت سنگھ کو 18، سجاد احمد کچلو کو 29، سریندر کمار چوہدری کو 21اور وبودھ گپتا کو 19ووٹ ملے اور تمام اپنی اپنی نشستیں جیت گئے۔ صوبہ جموں کی 4 نشستوں پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے وبودھ گپتا اور چرنجیت سنگھ خالصہ نے کامیابی حاصل کی ۔ پی ڈی پی کے سریندر چوہدری جبکہ این سی کے سجاد احمدکچلو نے نشستیں جیتیں۔ بھارتیہ جنتاپارٹی نے جموں کی چار نشستوں کے لئے اپنے تین امیدوار کھڑے کئے تھے جن میں سے کسی دوکی جیت یقینی تھی۔ اس لئے پیر کے روز شام دیر گئے بھارتیہ جنتا پارٹی ہائی کمان نے سکھ طبقہ کو نمائندگی دینے کے مقصد سے تیسرے امیدوار رمیش اروڑہ کا نام چناوی دوڑ سے واپس لے لیا۔

مزید :

عالمی منظر -