سات دن میں مختلف کنڈیشنز میں ورلڈ کپ کے3 میچ کھیلنا آسان نہیں ٗ مصباح

سات دن میں مختلف کنڈیشنز میں ورلڈ کپ کے3 میچ کھیلنا آسان نہیں ٗ مصباح

  

 نپیئر (این این آئی)پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق نے کہا ہے کہ سات دن میں مختلف کنڈیشنز میں ورلڈ کپ کے تین میچ کھیلنا آسان نہیں ۔میڈیا سیب ات چیت کرتے ہوئے مصباح الحق نے کہا کہ یہ صورتحال پاکستانی ٹیم کیلئے چیلنج ہے جسے تبدیل نہیں کیا جا سکتا البتہ اس سے نمٹنے کی کوشش ضرور کی جا سکتی ہے۔انھوں نے کہا کہ ورلڈ کپ کے آغاز میں پاکستانی ٹیم کو دو ہفتے میں تین میچ کھیلنے کو ملے اور جب میچوں کے درمیان بہت زیادہ وقفہ ہو تو ردھم میں فرق آجاتا ہے۔پاکستانی کپتان نے کہا کہ پاکستان کے بیٹسمینوں کے پاس سنہری موقع ہے کہ وہ جنوبی افریقہ اور آئرلینڈ کیخلاف اہم میچز سے قبل یو اے ای کیخلاف بڑا سکور کر کے کھویا ہوا اعتماد واپس لانے میں کامیاب ہوں۔انہوں نے کہاکہ نیپئر میں کنڈیشنز بیٹنگ کے لیے سازگار ہوتی ہیں ۔مصباح الحق نے کہا کہ زمبابوے کے خلاف جیت کے بعد کھلاڑیوں میں اعتماد آیا ہے اور ان کا موڈ بھی اچھا ہے تاہم اگلے تینوں میچ پاکستان کیلئے بڑی اہمیت رکھتے ہیں۔انھوں نے اس بات سے بھی اتفاق کیا کہ رن ریٹ کا معاملہ بھی اس پول بی میں اہم کردار ادا کریگا کیونکہ اس پول میں صورتحال واضح نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ زمبابوے کیخلاف میچ بھی وہ بڑے فرق سے جیت کر رن ریٹ بہتر بنانے کے بارے میں سوچ رہے تھے تاہم ایسا نہ ہوسکا اور اب متحدہ عرب امارات کے خلاف کوشش ہوگی کہ میچ پر گرفت مضبوط کی جائے اور پھر رن ریٹ کو بہتر کرنے کے بارے میں سوچا جائے۔مصباح الحق نے کہا کہ یقیناًپاکستانی ٹیم میں کرس گیل اور اے بی ڈی ویلیئرز جیسے بیٹسمین نہیں ہیں جو تنہا ہی میچ جتواسکتے ہیں تاہم پاکستانی بیٹسمین باصلاحیت ضرور ہیں جن کی اجتماعی کوشش میچ کا نقشہ بدل سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی بیٹسمینوں کا اس طرح کا تاثر نہیں بن پایا ہے کہ لوگ انہیں بہت زیادہ اہمیت دیں۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -