تشدد کا مقدمہ واپس نہ لینے پر 3 افراد خواتین کاتعاقب کرتے ہوئے عدالت پہنچ گئے

تشدد کا مقدمہ واپس نہ لینے پر 3 افراد خواتین کاتعاقب کرتے ہوئے عدالت پہنچ گئے

  

لاہور(نامہ نگار)آٹھ سالہ بچی ربیعہ پر تشدد کا مقدمہ واپس نہ لینے پر 3 افراد دو بہنوں روبینہ اور بلقیس کا تعاقب کرتے ہوئے مظفرگڑھ سے لاہورسیشن عدالت پہنچ گئے جبکہ عدالت کے باہر روبینہ صدمے سے بے ہوش ہوگئی۔ایڈیشنل سیشن جج نذرحسین نے ایس ایچ او نواب ٹاؤن کو مذکورہ درخواست گزاروں کو تحفظ فراہم کرنے کا حکم دے دیا۔عدالت میں مظرگڑھ کی دوبہنوں روبینہ اور بلقیس نے اپنے وکیل کی وساطت سے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ وہ مظفرگڑھ سے اپنی جان بچا کر دو روز سے نواب ٹاون میں چھپے ہوئی ہیں، ان کی بچی کوشاہد نامی شخص نے اغوا ء کرنے کے ساتھ ساتھ تشدد کا نشانہ بھی بنایا جس کا مقدمہ مظفرگڑھ میں درج کرایا گیا۔ درخواست گزاروں نے کہا کہ ملزمان نے ان کو مقدمہ واپس لینے کو کہا انکار پر ان کو بچی سمیت قتل کرنے کی کوشش کی

جس پر وہ رات کے وقت چھپ کر لاہور بھاگ آئیں یہاں بھی ان کا ملزمان اللہ بخش، اقبال بلوچ اور غلام فرید تعاقب کرتے ہوئے نواب ٹاون پہنچی ہیں ،عدالت سے استدعا ہے کہ انہیں تحفظ فراہم کیا جائے جس پر عدالت نے متعلقہ ایس ایچ او کو حکم دیا ہے کہ دونوں درخواست گزاروں کو تحفظ دیا جائے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -