عبیرہ قتل کیس، اہم انکشافات پر مبنی رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی گئی

عبیرہ قتل کیس، اہم انکشافات پر مبنی رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی گئی

  

لاہور(نامہ نگار)ماڈل عبیرہ قتل کیس کی تفتیش میں ہونے والی پیش رفت کی رپورٹ پولیس نے پراسیکیوشن ڈیپارٹمنٹ میں جمع کرادی ہے۔رپورٹ میں اہم انکشافات کیے گئے ہیں، پولیس رپورٹ کے مطابق 13 جنوری کو شیراکوٹ بس سٹینڈسے بریف کیس سے ایک نامعلوم لاش ملی جس کی شناخت بعد ازاں عبیرہ اقبال کے نام سے کی گئی،عبیرہ کے قتل کے الزام میں 28فروری کو طوبیٰ،فاروق الرحمن،حکیم ذیشان کو گرفتار کیا گیا،طوبی کی نشاندہی پر اس کے فیصل ٹاؤن کے مکان سے ایک کلوزہرکاڈبہ اور دوبوتل آرسینک زہربرآمدکیاگیا،عبیرہ اقبال کا موبائل فون،آرٹیفیشل جیولری اور کپڑے بھی برآمدکیے گئے،پولیس رپورٹ کے مطابق طوبیٰ اور فاروق حیدر20 ہزار روپے میں گوہرمشتاق دواخانہ سے زہرخریدکرلائے، طوبیٰ نے اپنے سابق شوہربابرجاویدبٹ کوبھی6 اکتوبر2013میں زہردے کر قتل کرنے کی کوشش کی تھی مگر وہ بچ گیا،اس دوران طوبی ٰکی چھوٹی بیٹی علاج نہ ہونے کی وجہ سے مرگئی،طوبیٰ عرف ازماراؤنے اس کا ذمہ دار بابربٹ کوٹھہرایا،، طوبیٰ نے بابربٹ کو قتل کرنے کا پروگرام بنایا،نجی ٹی وی چینل کے کیمرہ مین یوسف کھوکھر نے بابربٹ کو طوبی ٰکی عریاں تصاویرفراہم کی،طوبیٰ نے یوسف کو قتل کرنے کا پلان بنایا،،طوبیٰ نے کیمرہ مین یوسف کھوکھرکو ماڈل ٹاؤن پارک میں زہروالا جوس پلا کر مار دیا،24 دسمبر 2014کو طوبیٰ نے پلاننگ کے تحت عبیرہ سے دوستی کی،طوبیٰ نے عبیرہ کو بابربٹ سے تعلقات قائم کرنے کے لئے کہا تاکہ اس کی مدد سے بابر بٹ کو قتل کیا جاسکے تاہم عبیرہ کے انکار پر طوبی نے اسے بھی قتل کردیا،پولیس رپورٹ کے مطابق عبیرہ کی موت انتہائی زود اثرزہرسائینائیڈ کی وجہ سے ہوئی جو کھانے میں ملایا گیا تھا،،طوبی نے عبیرہ کی موت کو زیادتی کا رنگ دینے کے لئے عبیرہ کو برہنہ کردیااور پھرکیس الجھانے کے لئے طوبیٰ نے عبیرہ کی لاش والا بریف کیس سیالکوٹ کی ویگن میں رکھ دیاتھا۔

مزید :

صفحہ آخر -