ایٹمی ایران اسرائیل اور دنیا کے لئے خطرہ ہے،اسرائیلی وزیراعظم

ایٹمی ایران اسرائیل اور دنیا کے لئے خطرہ ہے،اسرائیلی وزیراعظم

  

واشنگٹن( اظہر زمان، بیوروچیف) اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے خبردار کیا ہے کہ اگر ایران ایٹمی طاقت بن گیا تو وہ صرف اسرائیل نہیں بلکہ پوری دنیا کے لئے خطرے کا باعث ہو گا۔ انہوں نے یہ بات امریکی کانگریس کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ سپیکر جان بوہبر نے پروٹوکول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے وائٹ ہاؤس کو اطلاع دیئے بغیر انہیں خطاب کرنے کی دعوت دی تھی۔ نائب صدر جو بائیڈن نے جو سینیٹ کے چیئرمین بھی ہیں متعدد ڈیموکریٹک ارکان کے ہمراہ اس خطاب کا بائیکاٹ کیا صدر اوبامہ اور ان کاموقف یہ تھا کہ اسرائیلی انتخابات سے دو ہفتے قبل ان کو دعوت دینے سے اوبامہ انتظامیہ کی غیر جانبداری متاثر ہو سکتی تھی۔

وزیراعظم نیتن یاہو نے ایران پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے بارہا ثابت کیا ہے کہ وہ نا قابل اعتبار ہے۔ یہ ملک’’ فتح، قبضے اور دہشت‘‘ کی راہ پر گامزن ہے اور ایرانی حکومت کا مذہبی تصور عسکریت پسندی پر مبنی ہے۔ ان کا کہنا تھا چھ عالمی طاقتیں ایران کے ساتھ جو معاہدہ کرنے جا رہی ہیں وہ اس کا ایٹم بم بنانے کا راستہ روکنے کی بجائے ایٹم بم بنانے کی راہ ہموار کرے گا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اگر ایران کو اسی طرح ڈھیل دی گئی تو وہ آئندہ پانچ سال میں 100 ایٹم بم بنا لے گا۔

اسرائیلی وزیراعظم نے صدر اوبامہ کو خبردار کیاکہ وہ ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدہ کرنے سے باز رہے کیونکہ ایسا کرنے سے’’ ایٹمی ڈراؤ نے خواب‘‘ کا آغاز ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جب تک ایران اپنا رویہ تبدیل نہیں کرتا اسے کوئی رعایت نہیں دینی چاہئے۔ انہوں نے امریکی کانگریس پر زور دیا کہ وہ ایران پر عائد اقتصادی پابندیوں کو مزید سخت کرے تاکہ وہ اپنے ایٹمی عزائم سے باز رہے۔

اسرائیلی وزیراعظم کی واشنگٹن آمد کے موقع پر ایک کویتی اخبار کی یہ رپورٹ سیاسی حلقوں میں زیر بحث رہی کہ صدر اوبامہ نے2014ء میں اسرائیل کو دھمکی دی تھی کہ اگر اس نے ایران کی ایٹمی تنضیات پر حملہ کرنے کی کوشش کی تو امریکہ اس کے طیاروں کو مار گرائے گا۔ اس رپورٹ کے مطابق وائٹ ہاؤس نے اسرائیلی وزیراعظم کے حملے کے مبینہ منصوبے کی منسوخ کرایا تھا۔ وائٹ ہاؤس نے اس خبر کی تردید کی ہے۔ تاہم صدر اوبامہ اسرائیلی وزیراعظم کے واشنکٹن دورے کے دوران ان سے نہ ملنے کے فیصلے پر قائم ہیں

مزید :

صفحہ اول -