ایچ ای سی کمیشن جدید اور معیاری اعلیٰ تعلیم پر یقین رکھتا ہے،ڈاکٹر نظام الدین

ایچ ای سی کمیشن جدید اور معیاری اعلیٰ تعلیم پر یقین رکھتا ہے،ڈاکٹر نظام الدین

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) پنجاب ہائر ایجوکیشن کمیشن جدید دنیا کا مقابلہ کرنے کیلئے معیاری اعلیٰ تعلیم پر یقین رکھتا ہے اور اسکی خاطر ٹھوس بنیادوں پر اقدامات بھی اٹھائے جارہے ہیں۔ یہ بات پنجاب ہائر ایجوکیشن کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر نظام الدین نے یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور کے شعبہ الیکٹریکل انجینئرنگ کے زیر اہتمام منعقدہ دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس برائے الیکٹریکل انجینئرنگ 2017ء کی افتتاحی تقریب میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ شعبہ انجینئرنگ معاشرے میں اپنا حصہ قابل عمل حل اور جدید ٹیکنالوجی متعارف کروانے سے ڈال سکتا ہے اور اس مقصد کیلئے نتیجہ خیز تحقیق اور تجربات نئی سوچ کے ساتھ کرنا ہوں گے اس کیلئے اساتذہ اور طلبہ کو مزید پیشرفت کرنا ہوگی۔ چیئر مین پی ایچ ای اسی نے کہا کہ اجتماعی سوچ اور منطق پر مبنی کوشش سے نہ صرف جامعات مستحکم ہو سکتی ہیں بلکہ بین الاقوامی جامعات کی صف میں نمایاں مقام حاصل کر سکتی ہیں لہذا اس پر مکمل سنجیدگی سے توجہ دینے کی اشد ضرورت ہے۔

تاکہ ترقی کے اہداف کا حصول ممکن ہوسکے اور ملک میں پر اعتماد فضاء قائم ہوسکے۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر فضل احمد خالد نے کہا کہ تحقیق اعلیٰ تعلیم میں ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہوتی ہے جس پر تمام اسٹیک ہولڈرز کو ذمہ داری کے ساتھ اپنا کردار ادا کرنا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرے کو نئی نئی ایجادات سے سہولت فراہم کرنے کیلئے اور ملکی معیشت کو استحکام دینے کی خاطر جدید خطوط پر استوار تکنیکی حکمت عملی واضع کرنے کا وقت آچکا ہے جس سے بھر پور فائدہ اٹھایا جانا چاہئے۔ اس کیلئے محققین کو جدید طرز ہائے تحقیق پر کام کر کے ایجادات سے روشناس کروانا چاہئے انہوں نے مزید کہا کہ جامعہ قابل عمل تحقیق اور صنعت سے مضبوط روابط قائم کرنے کیلئے ہمہ وقت کوشاں ہے تاکہ فارغ التحصیل طلبہ کیلئے ملازمت کے مواقع پیدا کیئے جا سکیں اور مارکیٹ کی طلب پوری ہو سکے۔ اس موقع پر شعبہ الیکٹریکل انجنیئرنگ کے سربراہ پروفیسرڈاکٹر طاہر اظہار نے شرکاء کو کانفرنس کا تعارف ، اس کے اغراض مقاصد اور مختلف سکالرز کی جانب سے موصول ہونے والے منتخب تحقیقی پرچوں کی تفصیل سے آگاہ کیا۔ جو الیکٹریکل کے شعبہ کے تمام نمایاں سیکٹرز پر مشتمل ہیں۔آخر میں وائس چانسلر نے مہمانوں کو یادگاری شیلڈ پیش کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4