وزیر مملکت پانی و بجلی کے سخت کارروائی کے اعلان نے افسران کی نیندیں اڑا دیں

وزیر مملکت پانی و بجلی کے سخت کارروائی کے اعلان نے افسران کی نیندیں اڑا دیں

  

ملتان (سٹاف رپورٹر) وزیر مملکت پانی وبجلی کی جانب سے آپریشنل افسروں کے خلاف سخت کارروائی کے اعلان پر آپریشنل اور فیلڈ(بقیہ نمبر54صفحہ7پر )

افسروں میں پریشانی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ وزیر مملکت نے دورہ ملتان کے دوران وزارت پانی وبجلی کی مستقبل کی پالیسی کا اعلان کردیا ہے۔ جس کے تحت ملازمتوں کے موجودہ سٹرکچر، ڈسپلن اور قواعد وضوابط کے علاوہ وزارت پانی وبجلی اور آپریشنل ، فیلڈ افسروں کے مابین معاہدے کئے جائیں گے۔ ان معاہدوں میں ٹرانسفارمرز جلنے اور خراب ہونے کی ذمہ داری سب ڈویژنل افسر پر عائد ہوگئی۔ ایکسئین بھی اس کے جوابدہ ہونگے۔ وزارت پانی وبجلی کا سنٹرل کنٹرول روم فیلڈ افسروں کی نہ صرف مانیٹرنگ کرے گا بلکہ ملک بھر سے صارفین کی شکایات بھی سنے گا اور اس پر کارروائی بھی کی جائیگی۔ وزارت پانی وبجلی سپرٹینڈنگ انجینئر، ایگزیکٹو انجینئر (ایکسئین) اور سب ڈویڑنل آفیسر (ایس ڈی او) سے معاہدہ کرے گی۔ ان معاہدوں کے تحت لائن لاسز میں کمی، ریکوری کا 100 فی صد ہدف‘ نادہندگان کیخلاف کارروائی اور موبائل میٹر ریڈنگ کا 100 فی صد ہدف حاصل کرنا ہوگا۔ ان اہداف کو حاصل نہ کرنے والے افسروں کو ملازمت سے فارغ کردیا جائیگا۔انجینئرز نے سخت اعلان کو ناانصافی اور سروس رولز کی خلاف ورزی قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ ملازمت سے برطرفی کے ایسے احکامات کو مسترد کرتے ہیں اور اس کیخلاف ہر حد تک جائیں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -