ایف آئی اے میں بڑے پیمانے پر تبادلے، مظہر کاکا خیل کا تبادلہ پر اسرار فون پر روک دیا گیا

ایف آئی اے میں بڑے پیمانے پر تبادلے، مظہر کاکا خیل کا تبادلہ پر اسرار فون پر ...

  

اسلام آباد(آن لائن)وزیرداخلہ کی ہدایت پرایف آئی اے میں بڑے پیمانے پرتبادلے کردیئے گئے ،گریڈ20میں اضافی چارج دیکرایف آئی اے میں بطورڈائریکٹرکام کرنے والے مظہرکاکاخیل کاتبادلہ صرف آدھے گھنٹے بعدپراسرارطاقت کے فون پرروک دیاگیا۔اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے ایک ہی دن میں دو نوٹیفکیشن ایک ہی شخص بارے جاری کرکے نئی روایت کو جنم دیدیا،مظہرکاکاخیل اسلحہ سمگلنگ کیس میں نیب سے پلی بارگین بھی کرچکے ہیں۔تفصیلات کے مطابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی ہدایت پر وفاقی تحقیقاتی ادارے میں بڑے پیمانے پر تقرریاں و تبادلوں کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا،ایڈیشنل ڈائریکٹر انٹرپول یاسین فاروق کو ایف آئی اے اکیڈمی،ڈپٹی ڈائریکٹر رانا نوید کو اے سی سی ڈیپارٹمنٹ ایف آئی اے اسلام آباد، اعجاز احمد خان کو ایف آئی اے ہیڈکوارٹر جبکہ احمد علی خان کو راولپنڈی اے ایچ ٹی سی ڈیپارٹمنٹ میں ٹرانسفر کرنے کے احکامات جاری کردئے گئے، ڈاکٹر مظہر کاکاخیل جو پولیس سروس آف پاکستان کے آفیسر ہیں اور ایف آئی اے کے داخلہ ڈویژن میں بیس گریڈ آفیسر کے طور پر کام کر رہے تھے ان کو فوری طور پر کام کرنے سے روک دیا گیا ہے اور اسٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کاحکم دیا گیا ہے۔لیکن صرف آدھے گھنٹے بعدقیصرخان خٹک سیکشن آفیسرکے دستخطوں سے ایک نیانوٹیفکیشن جاری کیاگیا،جس کے تحت مظہرکاکاخیل کوایف آئی اے میں ہی رہنے کی ہدایت کی گئی ،دلچسپ امریہ ہے کہ مظہرکاکاخیل ماضی میں خیبرپختونخواہ میں اسلحہ سمگلنگ کیس میں بھی ملوث رہ چکے ہیں اورنیب پلی بارگین کے ذریعے انہوں نے اپنی جان چھڑائی تھی ،ایف آئی اے میں بھی ان کے خلاف وزارت داخلہ کوکئی شکایات بھیجوائی گئیں لیکن گزشتہ روزان کاتبادلہ روک دیاگیاہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -