میں تو اس وقت پشاور میں کھیلا تھا جب افغانستان میں روسی بمباری کی آوازیں پشاور میں سنائی دیتی تھیں: ویوین رچرڈز

میں تو اس وقت پشاور میں کھیلا تھا جب افغانستان میں روسی بمباری کی آوازیں ...
 میں تو اس وقت پشاور میں کھیلا تھا جب افغانستان میں روسی بمباری کی آوازیں پشاور میں سنائی دیتی تھیں: ویوین رچرڈز

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا فائنل بالآخر پشاور زلمی اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے درمیان لاہور میں ہونے جا رہا ہے اور پشاور زلمی کی ٹیم میں شامل غیر ملکی کھلاڑی بھی اس میں شریک ہو رہے ہیں تاہم کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کیون پیٹرسن، لیوک رائٹ اور ٹائمل ملز سمیت دیگر غیر ملکی کھلاڑی پاکستان نہیں آئے۔

معروف برانڈز کے گرمیوں کے ملبوسات کیلئے شاندار سہولت متعارف، خواتین کیلئے خوشخبری آگئی

پی سی بی ا ور پی ایس ایل انتظامیہ غیر ملکی کھلاڑیوں کو لاہور آنے پر رضامند کرنے کیلئے سرتوڑ کوشش کرتی رہی اور ان کے ساتھ کئی غیر ملکی کھلاڑی بھی اس کام میں مصروف ہیں۔ ان میں سے ایک نام ہے سرویوین رچرڈز کا، جو کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مینٹور ہیں اور فائنل میچ کیلئے پاکستان آ رہے ہیں۔ انہوں نے کئی غیر ملکی کھلاڑیوں سے بات چیت کر کے انہیں لاہور آنے پر راضی کرنے کی کوشش کی۔

ذرائع کے مطابق سر ویوین رچرڈز نے غیر ملکی کھلاڑیوں سے کہا کہ ”اب تو حالات بہت چھے ہیں، میں تو اس وقت پشاور میں کھیلا تھا جب روسی افواج کی افغانستان میں بمباری کی آوازیں پشاور میں سنائی دیتی تھیں۔“

شادی کے سیزن میں اس چیز سے بال دھونے سے ان میں ایسی چمک آئے گی کہ سب آپ کی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائیں گے

اگرچہ ویوین رچرڈز سمیت پی سی بی بھی کئی غیر ملکی کھلاڑیوں کو پاکستان آنے پر راضی نہ کر سکا لیکن ان کی یہ بات پاکستان، پاکستانیوں اور پاکستانی کرکٹ سے محبت کا واضح ثبوت ہے۔

مزید : T20