ناصر جمشید نے سپاٹ فکسنگ کیس میں وعدہ معاف گواہ بننے کی پیشکش کر دی

ناصر جمشید نے سپاٹ فکسنگ کیس میں وعدہ معاف گواہ بننے کی پیشکش کر دی
ناصر جمشید نے سپاٹ فکسنگ کیس میں وعدہ معاف گواہ بننے کی پیشکش کر دی

  

لندن (صباح نیوز) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں سپاٹ فکسنگ سکینڈل کی تحقیقات میں نیا موڑ آنے کی توقع ہے کیونکہ قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی ناصر جمشید نے اس کیس میں وعدہ معاف گواہ بننے پر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔

معروف برانڈز کے گرمیوں کے ملبوسات کیلئے شاندار سہولت متعارف، خواتین کیلئے خوشخبری آگئی

تفصیلات کے مطابق سپاٹ فکسنگ سکینڈل میں عبوری طور پر معطل ہونے والے شرجیل خان اور خالد لطیف نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی جانب سے دیئے گئے شو کاز نوٹس کا جواب دیدیا ہے جس میں انہوں نے تمام الزامات کو یکسر مسترد کر دیا ہے تاہم ڈسپلن کی خلاف ورزی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب بکی نے ان کیساتھ ملاقات کی تو انہوں نے انتظامیہ کو خبر نہ دینے کی غلطی کی۔

ایسے میں برطانیہ میں نیشنل کرائم ایجنسی کی تحقیقات میں نئی پیش رفت ہوئی ہے اور ٹیسٹ اوپنر ناصر جمشید نے سپاٹ فکسنگ کے اس کیس میں وعدہ معاف گواہ بننے پر آمادگی ظاہر کی ہے۔ اس معاملے کی تفتیش کرنے والے ایک خفیہ ادارے کے مطابق ناصر جمشید نے سپاٹ فکسنگ میں ملوث دونوں کرکٹرز اور مبینہ سٹے باز یوسف انورکے خلاف وعدہ معاف گواہ بننے کی پیشکش کر دی ہے اور اگر ان کی یہ پیشکش قبول ہو گئی تو وہ بڑے سکینڈل اور کئی پردہ نشینوں کو بھی بے نقاب کریں گے۔

شادی کے سیزن میں اس چیز سے بال دھونے سے ان میں ایسی چمک آئے گی کہ سب آپ کی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائیں گے

کرپشن سکینڈل کی تحقیقات ابھی جاری ہیں اور شرجیل خان اور خالد لطیف اپنے آپ کو بے گناہ قرار دے رہے ہیں لیکن برطانیہ میں ناصر جمشید کی پیشکش سے ان کے گرد گھیرا تنگ ہوسکتا ہے۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ 10 روز قبل نیشنل کرائم ایجنسی نے تحقیقات کے تناظر میں ایک برطانوی اور 2 دیگر افراد کو گرفتار کیا تھا۔ برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق ان میں پاکستانی کرکٹر ناصر جمشید بھی شامل تھے تاہم ان تمام افراد کو اپریل 2017ءتک ضمانت پر رہائی دی جا چکی ہے۔

مزید : T20