مدارس اور علما کیخلاف کارروائیاں عالمی منصوبے کا حصہ ہیں،سیف الرحمن درخواستی

مدارس اور علما کیخلاف کارروائیاں عالمی منصوبے کا حصہ ہیں،سیف الرحمن ...

روجھان ( نمائندہ پاکستان) جامعہ دا ر العلوم محمدیہ روجھان کے زیر اہتمام ہونے والے سالانہ اجتماع سے اختتامی خطاب جمعیت علماء اسلام کے مر کزی سر پرست پیر سیف الرحمن درخواستی نے کہا کہ مدارس اور علماء کرام کے خلاف کاروائیں عالمی منصوبے کا حصہ ہیں اور اسی ایجنڈے کے تحت عالم اسلام (بقیہ نمبر33صفحہ12پر )

کے خلاف کاروائیں ہو رہی ہیں کیونکہ مغربیت کو اسلام اور دینی مدارس نے چیلنج کیا ہے ۔ اس لیے اسلام نشانہ پر ہے انہوں نے کہا کہ علماء انبیاء کے وارث ہیں گھبرانے والے نہیں مقابلہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا علماء امن کے علمبردار اور دینی مدارس کے گہوارے ہیں ۔ گھبرانے والے نہیں مقابلہ کریں گے ۔انہوں نے کہا علماء امن کے علمبر دار اور دینی مدارس امن کے گہوارے ہیں ۔ دینی مدارس کے طلباء کے ہاتھوں میں کلاشنکوف اور اسلحہ نہیں بلکہ اللہ کا قرآن ہے ۔ پاکستان علماء کونسل قاسمی گروپ کے مرکزی ناظم علامہ قاری شبیر احمد عثمانی نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شام میں ہونے والے مقام پر عالمی اداروں کو جو کردار ادا کرنا چاہیے تھا وہ نہیں کیا جا رہا ہے ۔ بلکہ پس پردہ مختلف سازشیں کھیلی جا رہی ہیں ۔ ان مظالم پر کوئی درندہ صفت انسان ہی خاموش رہ سکتا ہے ۔ انہوں نے کہا اقوام متحدہ سلامتی کونسل اور عالمی ادارے شام میں مسلمانوں پر مظالم رکوانے میں کردار ادا کریں ۔ تنظیم اہلسنت والجماعت کے مرکزی جنرل سیکریٹری مولانا عبدالحمید قاسمی نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت اسلام کا بنیادی عقیدہ اور شریعت محمدی کی اساس اور بنیاد ہے ۔جمعیت علماء اسلام (س) ضلع وہاڑی کے امیر مولانا عبدالعزیز حسانی ضلع لودھراں کے امیر مولانا ہاشم صدیقی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں کی ذلت اور رسوائی کی اصل وجہ اسوہ رسول ؐ سے دوری ہے ۔عالم دین سید ابو بکر شاہ ، مولانا عبدالحکیم صدر پوری ، مولانا نسیم احمد صدیقی ، مفتی محمد صدیق درخواستی نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قرآن کریم کی واضح ہدایت ہے کہ اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامو اور فرقہ فرقہ مت بنو ۔مگر اس کے با وجود مسلمان اختراق و انتشار کا شکار ہیں ۔ ایک دوسرے کے خون کے پیاسے ایک دوسرے کے محافظ بن گئے ۔ حضرت پیر سیف الرحمن درخواستی اور علماء کرام نے حفاظ کرام کی دستار بندی کرائی اور اسناد کی تقسیم کی ۔ اجتماع سے مولانا محمد صدیق راجن وپر کلاں ، مولانا محمد رفیق ، مولانا زکریا مزاری ، مولانا عبدالوہاب ، قاری عتیق الرحمن ارشد ، حاجی اللہ جوایا کونسلر ، ڈاکٹر محمد کلیم پاہی ، مولا نا محمد قاسم ، مولانا عبداللہ مستوئی ، قاری محمد یوسف ، مولانا محمد اسحاق ، مولانا عبدالحی ، امداد اللہ ڈاہر نے خطاب کیا اسٹیج سیکریٹری کے فرائض مولانا رحمت رسول درخواستی تلاوقت کلام پاک ، قاری احمد حسن ، قاری ابو بکر درخواستی نعتیہ کلام ، وینس برادران حفیظ الرحمن عثمانی ، عاشق بردارنی ، اجتماع کی اختتامی دعا حضرت مولانا پیر سیف الرحمن درخواستی نے کرائی ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر