میڈیا رست کا چوتھا ستون ہے :محمد حنیف

میڈیا رست کا چوتھا ستون ہے :محمد حنیف

بونیر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)تمام سیاسی جماعتو ں کے سربراھان نے پریس کلب میں منعقدہ باھمی مشارورتی اجلاس میں میڈیاں کو ریاست کا چوتھاستون قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ صحافیوں پر بھاری زمداریاں عائد ہوتی ہے کہ وہ علاقے مسائل اور عوام کو درپیش مشکلات کو اعلیٰ حکام تک پہنچانے میں کردار ادا کرے۔اور اداروں کی کاردکرگی کو مانیٹر کرکے قومی دولت کا عوام کو سہولیات پہنچانے کے لیے استعمال کو یقینی بنائیں۔بونیر پریس کلب ممبران کی خدمات کو سراہتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ مثبت صحافت کو فروع دیا جائے گا۔اجلاس سے جماعت اسلامی کے امیر محمد حنیف ،جنرل سیکریٹری محمد حلیم ،قومی وطن پارٹی کے صدر پروفیسر حمیدا لرحمان ۔پی پی پی پی کے صدرجوہر علی خان،سیکریٹری اطلاعات محمد علی،اے این پی کے بانی رکن میاں سید لائق باچا،پی ٹی ائی کے صدر ریاض خان ،جنرل سیکریٹری بحراد خان نے خطاب کیا ہے۔انھوں نے صحافیوں کو علاقے کی تعمیر و ترقی کے لئے سی پییک میں بونیر کو شامل کرنے،سوئی گیس فراھم کرنے ،صحت اور تعلیم کے سہولیات اور جاری ترقیاتی کاموں کی نگرانی کرنے اور عام ادمی کی اواز بن کر اسے ایوانوں تک پہنچائے ۔انہوں نے صحافیوں پر زور دیاہے کہ وہ ذاتی پسند ہوہ ناپسند سے بالا تر ہو کر سچ اور حقائق پر مبنی رپورٹنگ کرے ۔اور کسی کے ذات پر حملہ اور نہ ہوں ۔اور تمام جماعتوں کو یکساں کو ریج دے ۔انہوں نے میڈیا کو درپیش مشکلات کا بھی ذکر کیا اور یقین دہانی کرائی کہ پیشہ ورانہ خدمات کی انجام دہی میں تمام سیاسی جماعتیں انکے پشت پر ہوں گی ۔اور کسی ادارہ فرد یا جماعت کی جانب سے صحافیوں کو حراساں کرنے کی صورت میں صحافیوں کی حمایت کی جائے گی ۔انہوں نے بونیر میں سیاسی رواداری کو فروغ دینے اور ایک دوسرے کو تسلیم کرنے اور عزت وہ اخترام دینے کے ساتھ صحافیوں کی خدمات کی قدرکرنے کی یقین دہانی کرائی ہیں ۔انہوں نے پریس کلب کو غیر جانبدار مشترکہ حجرہ قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ یہاں سے اتحاد وہ اتفاق کی فضاء پیداکرنے کے لئے اقدامات اٹھائے جائیں گے انہوں نے تمام سیاسی جماعتوں کو باہمی مشاورتی اجلاس کے انعقادکو خوش ائندہ قرار دیاہے اور اس تسلسل کو جاری رکھنے کا مشورہ دیاہے ۔انہوں نے انے والے عام انتحابات میں پریس کلب کے کردارکو اہمقرار دیتے ہوئے کہاہے کہ تمام سیاسی جماعتیں اپس میں مل بھیٹنے کے لئے پریس کلب کو ترجیہح دیں گے جہاں مل کر اپس کے اختلافات اورتنازعات کو پرامن تصفیہ کرکے علاقہ کے تعمیر وہ ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لئے کمر باندھ کر اٹھ کھڑے ہوں گے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر