حکومت کو شکست کے بعد اخلاقی طور پر مستعفی ہوجاناچاہئے، عبدالغفور حیدری 

   حکومت کو شکست کے بعد اخلاقی طور پر مستعفی ہوجاناچاہئے، عبدالغفور حیدری 

  

کوئٹہ(این این آئی)جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل سینیٹر مولاناعبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ اسلام آباد کے سینٹ انتخاب میں حکومت کو شکست کے بعد اخلاقی طور پر مستعفیٰ ہوجاناچاہئے عمران خان اورانکی حکومت اگرا ستعفیٰ نہیں دیتے تو 26مارچ کو لانگ مارچ کے لئے ملک بھر سے قافلے اسلام آباد کیلئے روانہ ہونگے اور حکومت کا خاتمہ کرکے دم لیں گے۔یہ بات انہوں نے بدھ کی رات کوئٹہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر نومنتخب سینیٹر کامران مرتضیٰ ایڈووکیٹ،جمعیت علماء اسلام کے ارکان صوبائی اسمبلی ملک سکندرایڈووکیٹ،اصغر علی ترین،یونس عزیز زہری،حاجی نواز کاکڑ،سعید عزیز اللہ،سابق صوبائی وزراء عین اللہ شمس،حافظ خلیل احمدسارنگزئی سمیت دیگربھی موجود تھے۔ مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ سینٹ انتخابات میں قومی اسمبلی نے حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے سید یوسف رضا گیلانی کو کامیاب کرایا ہے حکومت کے پاس اب اخلاقی طور پر حکمرانی کا کوئی جواز نہیں لہذا ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت کو مزید اقتدار میں رہنے کا کوئی جواز حاصل نہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت 2018ء میں بھی سلیکٹ کی گئی اڑھائی برس میں ملک کی معیشت کو تباہ،نوجوانوں کوروزگار دینے کی بجائے بے روزگار، 50لاکھ گھر بنانے کی بجائے لوگوں کوبے گھر کیا گیاجو لوگ کہتے تھے کہ ڈالر کو 60روپے پر لائیں گے اور آئی ایم ایف سے قرضہ نہیں لیں گے الٹا آئی ایم ایف کے قرضے ختم کرکے غریب ممالک کوقرضہ دیں گے انہوں نے آج ملک کو مسائل سے دوچار کررکھا ہے جی ڈی پی منفی میں چلی گئی ہے میگاپروجیکٹ تو کیا چھوٹے منصوبے بھی شروع نہیں کئے گئے سی پیک رک چکا ہے سرمایہ کار ملک میں آنے کو تیار نہیں آج پی ڈی ایم اور قومی اسمبلی نے کٹھ پتلی حکومت،آئی ایم ایف حفیظ شیخ کو مسترد کردیا ہے۔

عبدالغفور حیدری 

مزید :

صفحہ آخر -