جنوبی پنجاب کے پہلے لوک ورثہ میلے کی تیاریاں عروج پر پہنچ گئیں  

جنوبی پنجاب کے پہلے لوک ورثہ میلے کی تیاریاں عروج پر پہنچ گئیں  

  

ملتان (سٹی رپو رٹر)جنوبی پنجاب کے پہلے لوک ورثہ میلے کی تیاریاں عروج پر پہنچ گئیں ہیں۔پانچ روزہ لوک ورثہ میلہ 10 مارچ سے شروع ہو کر15 مارچ تک جاری رہے گا۔حکومت پنجاب کی ہدایت پر14مارچ کو پنجاب کلچر ڈے منایا جائے گا۔سرائیکی کلچر پنجاب کلچر ڈے کا اہم حصہ ہو گا۔لوک ورثہ میلہ ملتان کے سب سے خوبصورت سیاحتی مقام قلعہ کہنہ قاسم باغ (بقیہ نمبر11صفحہ 6پر)

پر اپنا رنگ جمائے گا۔ میلے میں ڈھول بجے گا،شہنائی گونجے گی اور لوک موسیقی اپنے سْربکھیرے گی۔وسیب کا  ثقافتی جھومر ترنگ پیدا کرے گا اورمست دھمال بھی ڈالی جائے گی۔صوفی نائٹ میں تصوف کا جادو محفل پر سحر طاری کرے گا۔نامور صوفی گائیکہ صنم ماروی عارفانہ کلام کے ذریعے محفل کو چار چاند لگائے گی۔روائتی کھانوں کے سٹال لگیں گے اور چانپ، ساگ،مسی روٹی اور مکھن کی خوشبو مہکے گی۔ فلاور شو بھی میلے کا حصہ ہو گا اور پھول رنگ بکھیریں گے۔ ثقافت پر مبنی بلیو پاٹری اور دیگر اشیاء کے سٹال لگیں گے اور کاریگر اپنا ہنر دکھائیں گے۔پرفارمنگ آرٹ کے ایونٹس میں نامور فنکار اپنے فن کا لوہا منوائیں گے۔ملتان کا مشہور کیمل ڈانس اور گھڑ ڈانس شائقین کا دل لبھائے گا۔لوک ورثہ میلے میں کھیلوں کا میدان بھی لگے گا۔میلے کے انتظامات کو حتمی شکل دینے کے لئے ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی ہدایت پر قمرالزمان قیصرانی نے گزشتہ روز قلعہ کہنہ قاسم باغ کا دورہ کیا۔محکمہ سمال انڈسٹریز کی ریجنل ڈائریکٹر عمارہ اور والڈ سٹی پراجیکٹ کے افسران بھی انکے ہمراہ تھے۔

لوک ورثہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -