نظام مصطفےٰ پارٹی کی تشکیل نو کا عمل مکمل،عبوری مدت کیلئے منظوری

 نظام مصطفےٰ پارٹی کی تشکیل نو کا عمل مکمل،عبوری مدت کیلئے منظوری

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) نظام مصطفےٰ پارٹی کی تشکیل نو کا عمل مکمل ہو گیا۔ سنٹرل ایگزیکٹو کونسل نے مرکزی اور چاروں صوبوں کے عہدیداران کی عبوری مدت کے لئے منظوری دے دی۔ ایگزیکٹو کونسل کے لاہور کے مقامی ہوٹل میں منعقدہ اجلاس میں سابق وفاقی وزیر الحاج محمد حنیف طیب کو پارٹی کا مرکزی چیئرمین، میاں خالد حبیب الہی ایڈووکیٹ کو مرکزی صدر، پروفیسر عبدالجبار قریشی کو مرکزی سیکریٹری جنرل، انجینئر عبدالرشید ارشد کو مرکزی چیف آرگنائزر، سہیل اختر خان نیازی کو ایڈیشنل سیکریٹری جنرل، رانا محمد عرفان کو ڈپٹی سیکریٹری جنرل، پیر فدا حسین ہاشمی کو مرکزی نائب صدر، خالد عثمانی کو فنانس سیکریٹری اور محمد نواز کھرل کو سیکریٹری اطلاعات نامزد کیا گیا۔ اجلاس میں رانا زاہد محمود خان ایڈووکیٹ کو پنجاب کا صدر، سید بو علی شاہ کو جنرل سیکریٹری پنجاب، معظم شہزاد ساہی کو چیف آرگنائزر پنجاب، میاں عاقل منگھیروی اور شیخ نثار احمد کو نائب صدر پنجاب، ارشاد جاوید قریشی کو سیکریٹری اطلاعات پنجاب اور سلمان منہاس کو فنانس سیکریٹری پنجاب نامزد کیا گیا۔ 

خیبر پختونخواہ کے لئے محمد اویس قادری ایڈووکیٹ کو صدر، اسد خان جدون کو جنرل سیکریٹری اور امجد خان کنڈی کو چیف آرگنائزر نامزد کیا گیا۔ سندھ کے لئے پیر سید لیاقت علی شاہ کو صدر سندھ، علامہ خلیل الرحمن قادری کو جنرل سیکریٹری سندھ اور ڈاکٹر خوشی محمد خضری کو چیف آرگنائزر سندھ نامزد کیا گیا۔ بلوچستان میں ڈاکٹر گل بہار کو صدر، علامہ ایاز حسین کو جنرل سیکریٹری، محمد اقبال قادری کو چیف آرگنائزر اور سعید الدین طارق کو سیکریٹری اطلاعات نامزد کیا گیا۔ اسی طرح آزاد جموں و کشمیر میں حافظ محمد شفیق کو صدر، افتخار انقلابی کو جنرل سیکریٹری اور شیخ واجد شاکر کو چیف آرگنائزر نامزد کیا گیا۔ ایگزیکٹو کونسل کے اجلاس میں پہلے مرحلے میں بارہ رکنی سنٹرل سپریم کونسل کا اعلان بھی کیا گیا جس میں پروفیسر ڈاکٹر محمد طفیل سالک، علامہ نور المصطفے رضوی، الحاج شیخ امجد علی چشتی، محمد عثمان خان نوری، وسیم ممتاز ایڈووکیٹ، عبدالرزاق ساجد، پروفیسر غلام نبی نقشبندی، معین خان، الحاج محمد رفیع، ڈاکٹر شمس الرحمن شمس، ڈاکٹر غلام قادر فیاض اور صاحبزادہ ضیاء المصطفے نوری کو شامل کیا گیا ہے۔ ایگزیکٹو کونسل کا اجلاس پارٹی چیئرمین الحاج محمد حنیف طیب کی زیرصدارت مقامی ہوٹل میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اگلے چھ ماہ کے دوران ملک بھر میں ضلعی سطح پر تنظیم سازی کی جائے گی اور ضلعی کنونشن منعقد کئے جائیں گے جبکہ اکتوبر میں ملک گیر کنونشن ہو  گا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے الحاج محمد حنیف طیب نے کہا کہ نظام مصطفے پارٹی نظام مصطفے کو اقتدار میں لانے کے لئے انقلابی جدوجہد کرے گی۔ ہم موروثی سیاست، وی آئی پی کلچر اور کرپشن کے خلاف زوردار آواز اٹھائیں گے۔ نظام مصطفے پارٹی حزب احتساب کا کردار ادا کرے گی۔ حکومت اور اپوزیشن عوام کے مسائل کو بھول کر اقتدار و اختیار کی جنگ میں مصروف ہے۔ سینٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ اور خرید و فروخت انتہائی شرمناک ہے۔ حکومت ایک کروڑ ملازمتوں اور پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ پورا کرے۔ نظام مصطفے پارٹی کے صدر میاں خالد حبیب الہی ایڈووکیٹ نے کہا کہ سودی نظام معیشت کی وجہ سے ملک میں بے برکتی پھیلی ہوئی ہے۔ حکومت عوام کو ریلیف نہیں تکلیف دینے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ نظام مصطفے کا نفاذ ہی ملک و قوم کے تمام مسائل کا حل ہے۔ نظام مصطفے پارٹی ظلم، استحصال، جبر اور ناانصافی کی مزاحمت کرے گی۔ اجلاس سے پروفیسر ڈاکٹر محمد طفیل سالک، قومی اسمبلی کے سابق رکن محمد عثمان خان نوری، الحاج شیخ امجد علی چشتی، عبدالرزاق ساجد، عبدالرشید ارشد، رضوانہ لطیف، فدا حسین ہاشمی، بو علی شاہ، معظم شہزاد ساہی، رانا زاہد محمود خان، ڈاکٹر شمس الرحمن شمس، محمد نواز کھرل، سہیل اختر خان نیازی، پروفیسر عبدالجبار قریشی نے بھی خطاب کیا۔ اجلاس میں ملک بھر سے اراکین ایگزیکٹو کونسل نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -