وزیراعظم کا اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ، قومی اسمبلی اجلاس آج طلب، چوہوں کی طرح حکومت نہیں کر سکتا، جس کو اعتماد نہیں سامنے آکر اظہار کرے: عمران خان 

  وزیراعظم کا اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ، قومی اسمبلی اجلاس آج طلب، چوہوں ...

  

  اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ میں چوہوں کی طرح حکومت نہیں کر سکتا، جس کو مجھ پر اعتماد نہیں سامنے آکر اظہار کرے.وزیراعظم کے زیر صدارت حکومتی وزرا اجلاس ہوا جس میں وزیراعظم کو سینیٹ انتخابات کے نتائج پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے اجلاس کے شروع میں ہی اعتماد کا ووٹ لینے کے فیصلہ سے آگاہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اعتماد کا ووٹ لینے کا مقصد اپوزیشن کی پیسہ کی سیاست کو بے نقاب کرنا ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا عبدالحفیظ شیخ پر عدم اعتماد حکومت پر عدم اعتماد ہے۔ فیصلہ کیا ہے کہ اسی ایوان سے اعتماد کا ووٹ حاصل کروں گا۔ میں چوہوں کی طرح حکومت نہیں کر سکتا، جس کو مجھ پر اعتماد نہیں سامنے آ کر اظہار کرے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ مجھے اقتدار عزیز ہوتا تو خاموش ہو کر بیٹھ جاتا۔ وزیراعظم کا عہدہ اہم نہیں، نظام کی تبدیلی میرا مشن ہے۔ اگر عوامی نمائندوں کو مجھ پر اعتماد نہیں تو کھل کر سامنے آئیں۔ان کا کہنا تھا کہ آج میرے موقف کو مکمل طور پر تقویت ملی ہے۔ ووٹ بیچنے اور خریدنے والوں کو بے نقاب کروں گا۔ شفاف الیکشن کروانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے۔ یہ جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی، شفافیت کے لیے ہر فورم پر جائیں گے۔دریں اثنا وزیر اعظم کی طرف سے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کے فیصلے کے بعد   قومی اسمبلی کا اجلاس آج طلب کرلیا گیا ۔ذرائع کے مطابق آج قومی اسمبلی کا اجلاس ویسے ہی ہونا تھا اب  اجلاس کو اعتماد کے ووٹ کیلئے نئے اجلاس میں تبدیل کردیاجائیگا۔اس سے قبل پریس کانفرنس کرتے ہوئے  وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی، فواد چوہدری،شفقت محمود،اسد عمر اور معاون خصوصی شہباز گل  نے  کہاہے پی ٹی آئی  نے  متفقہ فیصلہ کیاہے کہ وزیراعظم  عمران خان  قومی اسمبلی سے اعتماد کاووٹ  لیں گے، وزیراعظم کاکہناہے کہ  میں وزیر اعظم تب ہوں جب مجھے ایوان کا اعتماد حاصل ہے، میں ایوان کو ایک بار پھر اپنی رائے کے اظہار کا موقع دیتا ہوں اس کے لئے ہم آئینی طریقہ کار اختیار کرینگے، علی حیدر گیلانی کی حرکتیں قوم کے سامنے ہیں۔ جس طرح کی سیاست پیپلز پارٹی نے کی وہ کسی سے پوشیدہ نہیں۔ الیکشن کمیشن کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی چاہیے، آج کا دن پاکستان کی جمہوریت کے لئے افسوس ناک ہے۔ جمہوریت کے علمبرداروں نے جمہوری قدروں کا قتل کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ علی حیدر گیلانی کی حرکتیں قوم کے سامنے ہیں۔ جس طرح کی سیاست پیپلز پارٹی نے کی وہ کسی سے پوشیدہ نہیں۔ الیکشن کمیشن کو اپنی ذمہ داری ادا کرنی چاہیے۔ ہم نے الیکشن کمیشن سے ٹیکنالوجی کا سہارا لے کر شفاف انتخابات کو یقینی بنانے کا کہا یہاں لاکھوں بیلٹ پیپر پرنٹ نہیں کرنے تھے لیکن یہ بھی نہیں کیا گیا۔ شاہ محمود نے کہا عمران خان نے حق اور باطل کی لڑائی شروع کی ہے۔ سیاسی کلچر کو تبدیل کرنے کے لئے ہر سطح پر کوشش کی۔ قوم دیکھ رہی ہے یہ لڑائی جاری ہے اور جاری رہے گی۔ آج کا دن پاکستان کی جمہوریت کے لئے افسوس ناک ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ عمران خان اور پی ٹی آئی نے متفقہ فیصلہ کیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اس ایوان سے اعتماد کا ووٹ  لیں گے۔ واضح ہو جائے گا کہ کون کہاں کھڑا ہے۔ جو عمران خان کے ساتھ ہے وہ ایک طرف اور جنہیں اپوزیشن کا نظریہ پسند آگیا ہے وہ اپوزیشن کی صفوں میں شامل  ہو جائیں۔ ہم اپنے نظریہ پرکھڑے ہیں۔ پی ٹی آئی کے کارکنوں کو اعتماد ہونا چاہیے کہ ہم اپوزیشن کا مقابلہ کرینگے۔ یہ لوگ مقاصد اور بچاؤ کی سیاست کرتے ہیں۔ ہم اس سیاست کو دفن کرکے دم لیں گے۔ سندھ کے  دو ارکان اسمبلی نے کہا کہ ہم تحریک انصاف کے امیدوار کو ووٹ نہیں دیں گے تو باقیوں میں  بھی یہ جرات ہونی چاہیے کہ کہہ سکیں کہ ہم نے نوٹ کو ووٹ دینا ہے ضمیر کو نہیں۔ بیرسٹر شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ عدم اعتماد کی بات اپوزیشن کی خام خیالی ہے، کسی بھی سیاسی جماعت کی اسمبلیوں میں نمائندگی سے ہٹ کر اگر کوئی نتیجہ آتا ہے تو یہ ایک سوالیہ نشان ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر اخلاقیات کی بات کی جائے تو یوسف رضا گیلانی کو تو سینیٹ الیکشن میں امیدوار ہی نہیں ہونا چاہیے تھا۔ اس سے قبلدوسری طرف وفاقی حکومت نے سینیٹ انتخابات میں یوسف رضا گیلانی کی جیت کو چیلنج کرنے کا اعلان کردیا۔ ہارس ٹریڈنگ کا الزام بھی لگادیا، دوبارہ گنتی  میں بھی حکومتی امیدوار ہار گیا۔   سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں  معاون خصوصی شہباز گل نے کہا کہ  غیر حتمی طور پر 7 ووٹ  مسترد  ہوئے ہیں، پانچ ووٹ کا فرق ہے، ابھی اس نتیجہ کو چیلنج کریں گے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے اپنے موقف میں کہا کہ اسلام آباد کی نشست پر بڑے پیمانے پر ہارس ٹریڈنگ ہوئی ماضی کے سارے ریکارڈ ٹوٹ گئے ہیں، تمام معاملات کی تحقیقات ہونی چاہیئے کیوں کہ خواتین کی نشست سے پی ٹی آئی کی فوزیہ ارشد جیت گئی ہیں۔تحریک انصاف کے مرکزی رہنما  سینیٹر فیصل جاوید نے  اپوزیشن کوچیلنج کیا ہے کہ اپوزیشن جرات کرے اور وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد لیکر آئے، عمران خان کوسب جانتے ہیں وہ ایسے معاملات سے مایوس نہیں ہوتے۔

وزیر اعظم

مزید :

صفحہ اول -