ضلع بنوں، آثار قدیمہ سے بھرا پڑا ہے: شوکت علی یوسفزئی 

  ضلع بنوں، آثار قدیمہ سے بھرا پڑا ہے: شوکت علی یوسفزئی 

  

 پشاور(سٹاف رپورٹر)ڈویژنل کمشنر بنوں شوکت علی یوسفزئی نے کہا ہے کہ ضلع بنوں ایک تاریخی حیثیت کا حامل ضلع ہے جو آثار قدیمہ سے بھرا پڑا ہے۔اس لئے ہمیں اپنی تاریخی ورثے کو محفوظ رکھنے کیلئے ہر ممکن کوششیں کرنی چاہیے جس سے ہمیں اپنی شاندار تاریخ سے جڑے رہنے کا سبب مہیاں ہوتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں محکمہ آثار قدیمہ پشاور کے بلائے گئے وفد سے ضلع بنوں کے قیمتی تاریخی ورثے کو محفوظ رکھنے کیلئے منعقدہ اجلاس سے کیا۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر بنوں کیپٹن (ر) محمد زبیر خان نیازی،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر بنوں شبیر خان اور محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرمحمد خالد خان موجود تھے۔ اس موقع پر کمشنر بنوں ڈویژن شوکت علی یوسفزئی نے کہا کہ ضلع بنوں کے دو سو پچاس سالہ پرانا تاریخی ڈپٹی کمشنرکاپہلے گھر بعد میں ڈپٹی کمشنر کا دفتر اور اس کے بعد وہاں محافظ خانہ اور ڈی۔کے دفتر واقع ہیں۔اس کو گرانے اور ختم کرنے کے بجائے اس مضبوط بنیادوں کے حامل عمارت کو تاریخی ورثے کی حیثیت میں محفوظ بنایا جائے تاکہ آنے والے نسلوں کو اپنی تاریخی مقامات دیکھنے کے مواقع مل سکے۔ بعد ازاں ڈپٹی کمشنر بنوں محمد زبیر خان نیازی اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر شبیر خان نے محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرین کے ہمراہ تفصیلی وزٹ کیااور قابل مرمت جگہوں کو آثار قدیمہ کے تحت محفوظ بنانے کیلئے جگہوں کی نشاندہی کی جس پر محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرین نے ہر ممکن کوششیں کرکے تاریخی ورثے کو محفوظ بنانے کیلئے تہیہ کرلیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -