کے الیکٹرک بجلی کو سرپلس پوزیشن میں لانے کیلئے پر عزم 

  کے الیکٹرک بجلی کو سرپلس پوزیشن میں لانے کیلئے پر عزم 

  

کراچی (پ ر) کے الیکٹرک پاور ویلیو چین میں منصوبہ بندی کے تحت کی جانے والی سرمایہ کاری کے ذریعے، 2022 تک کراچی کو بجلی کی سرپلس پوزیشن میں لانے کیلئے پرعزم ہے۔ یہ سرمایہ کاری ریگولیٹری کی بروقت منظوریوں سے مشروط ہے جس کی بدولت  کے الیکٹرک  اس قابل ہوجائے گا کہ صارفین اور ملکی معیشت کو بے شمار فوائد پہنچائے جا سکیں۔ کے الیکٹرک کے چیف فنانشیل آفیسر - عامر غازیانی نے کاروباری حلقوں کی ایک تجزیاتی نشست کے دوران، یہ باتیں بیان کیں۔ یہ نشست یکم مارچ کو ایک ویبی نار (webinar) اجلاس میں منعقد ہوئی جس میں معروف بروکریج ہاؤسز اور اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کے تجزیاتی ماہرین نے شرکت کی۔ کورونا وباء کے منفی اثرات اورمختلف حکومتی اداروں پربڑھتے ہوئے قابل وصول واجبات کی بدولت مالیاتی لاگت میں اضافہ ہوا۔ جس کے باعث، کے الیکٹرک کو مالی سال  2020 کے دوران، نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔ تاہم تجزیاتی ماہرین کو یہ بتایا گیا کہ سال 2021 کی پہلی شش ماہی کے دوران، اہم آپریشنل اور مالیاتی اشاریوں میں واضح بہتری آئی جس میں تقسیم شدہ یونٹس میں 4.8فیصد اضافہ،ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن کے نقصانات میں 0.6فیصد بہتری اور شرح سود میں کمی شامل ہے۔ان بہتریوں کی بدولت مالی سال 2021میں کے الیکٹرک کو دوبارہ منافع بخش ادار ہ بننے میں مدد ملی۔کے الیکٹرک، 2022  تک، کراچی کو بجلی کی سرپلس پوزیشن میں لانے کیلئے اپنے عزم پر قائم ہے۔ آر ایل این جی پر مبنی، 900 میگا واٹ کا BQPS-III   پاور پلانٹ بھی  متوقع ٹائم لائنز کے مطابق تکمیل کے مراحل طے کر رہا ہے اور450میگا واٹ کا پہلا یونٹ، مئی  2021 تک بجلی کی پیداوار کا آغاز کر دے گا۔  یہ پاور پلانٹ کے الیکٹرک کے جنریشن فلیٹ کی کارکردگی کو مزید موثر بنائے گا، جو کہ  مالی سال 2020  میں 38 فیصدتھی، اور مالی سال 2023 تک بڑھ کر48 فیصدہو جائے گی۔ اس کے علاوہ،  350 میگا واٹ  قابل تجدید توانائی کے منصوبوں کی تعمیر بھی مختلف مراحل میں جاری ہے۔ 

مزید :

صفحہ آخر -