کیا عمران خان قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر پائیں گے ؟ سینئر صحافی کامران نے بڑا دعویٰ کردیا 

کیا عمران خان قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر پائیں گے ؟ سینئر صحافی ...
کیا عمران خان قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر پائیں گے ؟ سینئر صحافی کامران نے بڑا دعویٰ کردیا 

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینیٹ الیکشن میں یوسف رضا گیلانی کی جیت اورحکومتی امیدوارعبد الحفیظ شیخ کی حیران کن شکست نےپورے ملک کی سیاست کو ہلا کر رکھ دیا ہے،متحدہ اپوزیشن نےیوسف رضا گیلانی کی فتح کے بعد وزیراعظم سے استعفے کا مطالبہ کیا ہےجبکہ عمران خان نے قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ کرتے ہوئے اپوزیشن پر اخلاقی برتری حاصل کر لی ہے،سینیٹ الیکشن کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پرسینئرصحافی اور تجزیہ کار کامران خان بھی میدان میں آگئے ہیں اور اُنہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان قومی اسمبلی سےنہ صرف اعتمادکا ووٹ حاصل کر لیں گے بلکہ اُن کی حکومت ایک نیا جنم بھی لے گی اور اپنے ارد گرد کا گند بھی صاف کرے گی ۔

تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹس میں کامران خان نے دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ پرسوں 12 بجے کے قریب عمران خان قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لے لیں گے، اسکے ساتھ اُن کی حکومت نیا جنم لے گی، پرسوں کے بعد بھی اُنکے پاس اتنی مدت ہوگی جو نوے کی دھائی میں ایک حکومت کی ہوتی تھی، نئی عمران خان حکومت عوام کی توقعات سے قریب تر ہوگی، وہ اپنے گرد و پیش کے گند کو دور کریں گے۔

کامران خان کا اپنے دوسرے ٹویٹ میں کہنا تھا کہ کون انکاری ہے کہ کل جیت خفیہ بیلٹ کی ہوئی؟ ووٹ فروشی کاروبار نے دوام پایا، عمران خان اسی لئے اوپن بیلٹ کے لئے کبھی سپریم کورٹ اور کبھی الیکشن کمیشن کے دروازوں سے سر ٹکرا رہے تھے، کم از کم 15 پی ٹی آئی اراکین ( 10 نے گیلانی کو ووٹ دیئے جبکہ پانچ  نے ووٹ خراب کئے) ایک کی بھی ہمت نہیں سر اٹھا کر اقرار کرے.انہوں نے اپنے تیسرے ٹویٹ میں کہا کہ عمران خان ہفتے کو قومی اسمبلی سے اعتماد ووٹ لیں گے، دودھ کا دودھ پانی پانی ہوگا، اگر یہ 15/20 حکومتی اتحادیوں نے ووٹ بیچ کر نہیں بلکہ ضمیر و نظریات کی بنیاد پر یوسف رضا گیلانی کو جتوایا ہے تو  پرسوں عمران خان کے خلاف اسمبلی فلور پر اعتماد ووٹ دینے سے انکار کردیں ،ورنہ ووٹ نیلامی کنفرم ہے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -