والد اپنی بیٹی کا سرتن سے جدا کرکے کٹے ہوئے سر سمیت تھانے پہنچ گیا

والد اپنی بیٹی کا سرتن سے جدا کرکے کٹے ہوئے سر سمیت تھانے پہنچ گیا
والد اپنی بیٹی کا سرتن سے جدا کرکے کٹے ہوئے سر سمیت تھانے پہنچ گیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں ایک باپ نے غیرت کے نام پر اپنی بیٹی کا سر تن سے جدا کر ڈالا اور کٹا ہوا سر لے کر خود ہی تھانے پہنچ گیا۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واردات بھارتی ریاست اترپردیش کے ضلع ہردوئی میں ہوئی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ 17سالہ مقتول لڑکی نے ایک نوجوان کے ساتھ معاشقہ چلا رکھا تھا، جسے لڑکے کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں دیکھ کر باپ نے موت کے گھاٹ اتار ڈالا۔

رپورٹ کے مطابق قاتل کا نام سرویش کمار بتایا گیا ہے جو ہردوئی کے پانڈے تارا نامی گاﺅں کا رہائشی ہے اور سبزی فروخت کرتا ہے۔ اس نے چند روز قبل اپنی بیٹی کو اس کے آشنا کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں دیکھا تھا اور اسی وقت اسے سبق سکھانے کا فیصلہ کر لیا تھا۔ گزشتہ روز وہ سہ پہر تین بجے گھر آیا اور اپنی بیٹی کو کمرے میں بند کرکے ٹوکے سے اس کی گردن کاٹ دی اور کٹا ہوا سر اٹھا کر 2کلومیٹر دور مجھیلا پولیس سٹیشن پہنچ گیا۔ پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے اس کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ واضح رہے کہ لڑکی 12ویں جماعت کی طالبہ تھی اور تین بہنوں اور ایک بھائی میں سب سے بڑی تھی۔ 

مزید :

بین الاقوامی -