قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران شہبازشریف ،صدارتی امیدوار محمود اچکزئی کی تقریر پر 'غصے' میں آگئے

قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران شہبازشریف ،صدارتی امیدوار محمود اچکزئی کی ...
قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران شہبازشریف ،صدارتی امیدوار محمود اچکزئی کی تقریر پر 'غصے' میں آگئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر ایاز صادق کی زیر صدارت جاری ہے جس دوران سپیکر نے محمود اچکزئی کو شہبازشریف کے احتجاج کے بعد ذاتیات پر بات کرنے سے روک دیا ۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران سپیکر نے بلاول بھٹو کو اظہار خیال کی اجازت دی تو انہوں نے کہا کہ آج صبح پتا چلا کہ محمود اچکزئی کے گھر پر چھاپہ مارا گیاہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں اور وزیراعلیٰ بلوچستان سرفراز بگٹی سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ معاملے کی تحقیقات کروائیں ، میں چاہتاہوں کہ سپیکر صاحب آپ محمود اچکزئی کو بات کرنے کی اجازت دیں، محمود اچکزئی صدارتی امیدوار ہیں، بلاوجہ صدارتی انتخاب کو متنازع بنانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

محمود اچکزئی نے خطاب شرو ع کیا تو سرکاری ٹی  وی کی جانب سے نشریات بند کر دی گئیں تاہم تقریر کے دوران محمود اچکزئی کی جانب سے استعمال کیئے گئے الفاظ پر شہبازشریف نے کھڑے ہو کر احتجاج کیا اور کہا کہ " میں محمود اچکزئی کا احترام کرتاہوں، ان کے الفاظ کو حذف کیا جائے ، اگر ذاتیات پر بات ہو گی تو بہت دور تک چلی جائے گی "۔ 

سپیکر اسمبلی ایاز صادق نے محمود اچکزئی کو ذاتیات پر بات کرنے سے روک دیا اور کہا کہ آپ سینئر سیاست دان ہیں اس لیے ذاتیات پر بات نہ کریں ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -