5بہنوں کے اکلوتے بھائی کی پر اثر ہلاکت دوستوں نے زہر دیکر قتل کیا والدین

5بہنوں کے اکلوتے بھائی کی پر اثر ہلاکت دوستوں نے زہر دیکر قتل کیا والدین

  

                        لاہور(لیاقت کھرل) فیکٹری ایریا کے علاقہ میں پانچ بہنوں کا اکلوتا بھائی 24سالہ اکاﺅنٹنٹ وقاص احمد دوستوں کے ساتھ گپ شپ کے دوران پر اسرار طور پر ہلاک ہو گیا، والدین نے الزام لگایا ہے کہ وقاص احمد کو دوستوں نے زہر دیکر موت کے گھاٹ اتارا ہے۔ پولیس نے قتل کی دفعہ 302کے تحت مقدمہ درج کر کے وقاص احمد کے چار دوستوں کو حراست میں لیکر تفتیش شروع کر دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق فاروق کالونی والٹن روڈ کا رہائشی 24سالہ وقاص احمد ایک پرائیویٹ کمپنی میں بطور اکاﺅنٹنٹ کام کرتا تھا اور اس کے ساتھ اس نے گارمنٹس کا بھی کاروبار بھی شروع کر رکھا تھا ۔وہ ہفتہ کی رات کو ڈیوٹی سے واپس آیا اور دوستوں کے ہمراہ پان کھانے کیلئے نکلا اور پان کھانے کے بعد پان شاپ کی دکان کے سامنے ایک کرسی لیجا کر اکیلے بیٹھ کر کسی دوست کو پہلے ٹیلی فون اور بعد میں ایس ایم ایس کیا تھا کہ اس کی اچانک طبیعت خراب ہو گئی جس پرپان شاپ کے مالک آصف حبیب اور دیگر دوستوں نعیم وغیرہ نے اسے اٹھا کر جنرل ہسپتال پہنچایا۔ ہسپتال پہنچنے کے دوران نوجوان وقاص احمد نے ریسکیو کی گاڑی میں ریسکیو ٹیم اور ہسپتال کے عملہ کو بتایا کہ اسے کسی نے زہر دیا ہے اور ہسپتال میں چند گھنٹے زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعدوہ دم توڑ گیا۔ نوجوان وقاص احمدکی والدہ اور رشتے دار ہسپتال پہنچے تو اس کے منہ سے زہر نما پانی بہہ رہا تھا، جس پر وقاص احمد کی والدہ سیدہ زاہدہ جاوید نے الزام لگایا کہ اس کے نوجوان بیٹے کو اس کے دوستوں نے زہر دیکر ہلاک کیا ہے اور اس کے بیٹے کی موت زہر خورانی سے واقع ہوئی ہے۔پولیس نے والدہ کے بیان پر قتل کی دفعہ 302کے تحت مقدمہ درج کر کے نوجوان وقاص کے چار دوستوں آصف ، حبیب اور نعیم وغیرہ کو حراست میں لے لیا ہے، انچارج انویسٹی گیشن انسپکٹر نذیر اوپل اور تفتیشی آفیسر ممتاز احمد نے بتایا کہ وقاص احمد کی ہلاکت کے اصل اسباب پوسٹ مارٹم کی رپورٹ کے بعد سامنے آئیں گے۔ حراست میں لئے جانے والے افراد سے تفتیش کی جا رہی ہے کہ آیا وقاص کو کسی نے زہریلا پان یا کوئی زہریلی چیز تو نہیں کھلائی ہے جس سے اس کی موت واقع ہوئی ہے۔ پوسٹ مارٹم کی رپورٹ اور فزانزک سائنس لیبارٹری کی رپورٹ کے بعد موت کے اصل اسباب سامنے آئیں گے ،  فی الحال کوئی بھی رائے دینا قبل از وقت ہے۔ دوسری جانب نوجوان آصف کی والدہ اور کزن وقار عظیم سمیت رشتے داروں اور محلے داروں کا کہنا ہے کہ نوجوان وقاص کی موت زہر خورانی سے واقع ہوئی ہے اور اس میں وقاص کے دوست ملوث ہیں، پولیس نے وقاص احمد کی لاش پوسٹ مارٹم کے بعد ورثاءکے حوالے کر دی جس کو نماز جنازہ کے بعد مقامی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا ہے۔

 

مزید :

علاقائی -