ہمارے عالمی دوستوں کو یقین ہے پاکستان میں دیانتداری ذمہ دار اور شفاف حکومت بر سر اقتدار ہے ،شہبا زشریف

ہمارے عالمی دوستوں کو یقین ہے پاکستان میں دیانتداری ذمہ دار اور شفاف حکومت ...

  

لاہور(پ ر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ وزیراعظم محمدنوازشریف کی قیادت میں ملک کو توانائی بحران اور انتہاء پسندی کے ناسور سے نجات دلائیں گے۔عوام سے کیا گیا ایک ایک وعدہ یاد ہے جسے ہر قیمت پر پورا کریں گے۔ ہمارے لیے یہ بات باعث اعزاز ہے کہ پنجاب حکومت کی کارکردگی کو برطانیہ کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون ،وزیرخارجہ ولیم ہیگ، وزیرداخلہ تھریسا مے اوروزیربرائے بین الاقوامی ترقی جسٹن گریننگ نے شاندار الفاظ میں سراہا ہے،یہ محض حسن اتفاق نہیں کہ ہمارے عالمی دوست پاکستان سے دل کھول کرتعاون کررہے ہیں بلکہ انہیں یقین ہے کہ پاکستان میں ایک دیانتدار، ذمہ دار اور شفافیت پر یقین رکھنے والی حکومت برسراقتدار ہے، اگر ایسا نہ ہوتا تو ہمارے دوست اپنی یہ بند مٹھی پہلے بھی کھول سکتے تھے، ہم اپنے دوست ممالک کے شکرگزار ہیں کہ انہیں پاکستان اورپاکستانی عوام کی مشکلات کا احساس ہے،لیکن ہماری منزل خود مختاری،خود انحصاری اوراپنے وسائل کو بروئے کار لاکر خوشحالی کا حصول ہے۔وہ لندن میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے عہدیداران اورکارکنان کی جانب سے دےئے گئے استقبالیہ سے خطاب کررہے تھے ۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ ایک برس قبل جب پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے اقتدار سنبھالا تو حالات انتہائی خراب تھے ۔ملکی معیشت تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی تھی،کرپشن کا دور دورہ تھا ۔ادارے زبوں حالی کا شکار تھے ۔لیکن ہم نے تمام مشکلات کے باوجود عوام کی خدمت کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنایا اورآج ایک بر س کے بعدصورتحال میں خاطرخواہ بہتری آئی ہے ،تمام معاشی اعشارئیے بہتر ہوئے ہیں۔ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں بہتری سے پاکستان پر 800ارب روپے بیرونی قرضوں کا بوجھ کم ہوا ہے۔پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ عوام تک پہنچایا گیا ہے ،جس سے مہنگائی کی شرح بھی کم ہوئی ہے ۔زرمبادلہ کے ذخائر بہتر اورٹیکس وصولیوں کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ برطانیہ کے ادارے ڈیفڈ کے تعاون سے جنوبی پنجاب کے چار اضلاع سے شروع کیا جانے والا سکل ڈویلپمنٹ پروگرام خود انحصاری اور خود مختاری کی منزل کی طرف ایک حوصلہ افزاء اقدام ہے، جس کے تحت صوبے کے 40ہزار سے زائد نوجوانوں کو ہنر مند بنایا گیا ہے اور اب اس پروگرام کا دائرہ کار 18اضلاع تک بڑھا دیا گیا ہے۔ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام کو پاکستان کے دیگر صوبوں کے ساتھ ساتھ دوسرے ممالک کے لیے بھی رول ماڈل بنائیں گے۔انہوں نے کہاکہ ہر پاکستانی کو فخر ہونا چاہیے کہ پاکستان کا نام بیرونی دنیا میں مثبت الفاظ میں لیا جانے لگا ہے اوریہ بہت بڑی کامیابی ہے۔ پنجاب حکومت نے اوورسیزپاکستانیوں کے لئے کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کمیشن کے قیام میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی تجاویز اور سفارشات کو اولیت دی جائیگی۔ہم نے خود جلاوطنی کے دوران بیرون ملک دن گزارے ہیں اورہم جانتے ہیں کہ بیرو ن ملک بسنے والے پاکستانیوں کے مسائل کیا ہیں؟انہوں نے کہا کہ پاکستان کے لیے 32ارب ڈالرکا ترقیاتی پیکیج چین کا وزیراعظم محمد نواز شریف کی قیادت پر بھر پور اعتماد کامظہر ہے۔یہ32ارب ڈالرکا پیکیج چین کی قیادت کا پاکستانی عوام کے لیے ایک شاندار تحفہ ہے اور اس تاریخی پیکیج سے 20ہزار میگاواٹ کے بجلی کے منصوبے اگلے 7 برس کے دوران لگائے جائیں گے،جس سے ملک میں توانائی بحران کاخاتمہ ہو گا۔انہوں نے کہا کہ رواں ماہ پاکستان میں توانائی کے مختلف منصوبوں پر کام کا آغاز کیا جارہا ہے۔پورٹ قاسم اورساہیوال میں کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس کا سنگ بنیادرکھا جائے گا،جن سے مجموعی طورپر 2500میگاواٹ بجلی اگلے 3برس میں حاصل ہوگی۔سابق حکمرانوں کے لالچ اور بدترین مجرمانہ غفلت کے باعث 450میگاواٹ کا نندی پور پاور پراجیکٹ3برس تک سرد خانے میں پڑارہا۔قومی اہمیت کے اس اہم منصوبے کی مشینری کراچی پورٹ پر زنگ آلود ہوگئی لیکن سابق حکمرانوں کے کان پر جوں تک نہ رینگی۔چینی کمپنی کے انجینئرواپس چلے گئے۔سابق حکمرانوں نے نندی پور پاور پراجیکٹ کو کرپشن کے قبرستان میں دفن کردیاتھا لیکن مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے آتے ہی اس اہم منصوبے کودوبارہ زندہ کیا اورصرف چند ماہ کے اندرمنصوبے پر اس تیز رفتاری اوراعلی معیار کے ساتھ کام کیا گیا کہ پہلی ٹربائن جو کہ نومبر 2014ء میں چلنی تھی وہ رواں ماہ بجلی کی پیداوار کا آغاز کررہی ہے۔عزم و ہمت کی اس داستان کے بنیادی ستون دیانتداری،محنت ،شفافیت اور ایمانداری ہیں۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ(ن) کی حکومت کا ہر قدم عوام کی بہتری کے لیے جانب اٹھ رہا ہے ۔تمام منصوبے شفافیت اور اعلی معیار کو مدنظر رکھ کر مکمل کیے جارہے ہیں۔عوام کے وسائل کو عوام کی فلاح و بہبود پر ہی خرچ کرنے کی اعلی مثالیں قائم کی گئی ہیں۔ایک برس کے دوران ہمارے مخالفین بھی ایک پائی کی خیانت کا الزام نہیں لگاسکے۔

مزید :

صفحہ اول -