’مجھے یہاں نوکری کیلئے بلایا گیا تھا لیکن ائیرپورٹ پر ہی۔۔۔‘ 16 سالہ غیر ملکی لڑکی بھاگتے ہوئے دبئی کے پولیس سٹیشن میں گھس گئی اور اندر جاتے ہی ایسی بات بتادی کہ پولیس والوں کے چہرے بھی شرم سے لال ہوگئے

’مجھے یہاں نوکری کیلئے بلایا گیا تھا لیکن ائیرپورٹ پر ہی۔۔۔‘ 16 سالہ غیر ...
’مجھے یہاں نوکری کیلئے بلایا گیا تھا لیکن ائیرپورٹ پر ہی۔۔۔‘ 16 سالہ غیر ملکی لڑکی بھاگتے ہوئے دبئی کے پولیس سٹیشن میں گھس گئی اور اندر جاتے ہی ایسی بات بتادی کہ پولیس والوں کے چہرے بھی شرم سے لال ہوگئے

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں بیوٹی پارلر کی نوکری کے لئے لائی گئی نوعمر بنگالی لڑکی کو بدذات مجرموں نے آتے ہی قحبہ خانے کی زینت بنا دیا۔ جنسی مظالم سے تنگ لڑکی قحبہ خانے سے فرار ہو کر پولیس کے پاس پہنچ گئی، جس کے بعد پولیس نے ایک معمر چینی بزنس مین کو گرفتار کرلیا ہے جو ایک فلیٹ کو قحبہ خانے کے طور پر استعمال کررہا تھا۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق فلیٹ سے 15 سال کی ایک اور بنگلہ دیشی لڑکی کو بھی بازیاب کروایا گیا۔ ان لڑکیوں کو اپریل 2015ءمیں بیوٹی سیلون میں ملازمت کا کہہ کر دبئی لایا گیا تھا ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکیوں کو تشدد کرکے جسم فروشی پر مجبور کیا گیا جبکہ انہیں جنسی مساج کی خدمات فراہم کرنے کیلئے بھی مجبور کیا جاتا تھا۔ مکروہ دھندے کا انکشاف اس وقت ہوا جب 16 سالہ لڑکی فرارہو کر پولیس کے پاس پہنچ گئی۔

اماراتی پولیس افسر نے بیوی کی کزن کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا ،ایک سال کی سزا

لڑکی نے پولیس کو بتایاکہ جب اسے دبئی لایا گیا تو اس کا پاسپورٹ ائرپورٹ پر ہی دو بنگلہ دیشی مردوں نے اپنے قبضے میں لے لیا ۔ وہ اسے ایک فلیٹ پر لے گئے جہاں ایک چینی خاتون اور متعدد ایشیائی لڑکیاں موجود تھیں۔ ان لڑکیوں نے بتایا کہ چینی خاتون ان سے جسم فروشی اور جنسی مساج کا کام کرواتی ہے۔ لڑکی کا کہنا تھا کہ جب اس نے یہ کام کرنے سے انکار کیا تو بنگلہ دیشی مردوں نے اس پر شدید تشد دکیا۔

پولیس نے قحبہ خانے سے دو بنگلہ دیشی مردوں کو گرفتار کیا، جن میں سے ایک کو سات سال قید کی سزا سنائی گئی جبکہ دوسرے کو بری کردیا گیا۔ بعدازاں مزید تحقیقات میں معلوم ہوا کہ قحبہ خانے کے طور پر استعمال ہونے والا فلیٹ ایک 62 سالہ چینی بزنس مین نے کرائے پر لے رکھا تھا۔ پولیس نے چینی شہری کوبھی گرفتارکرکے پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کردیا۔ اس شخص پر قحبہ خانہ چلانے اور کمسن لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کرنے کے الزامات ہیں۔

مزید :

عرب دنیا -