ایجنٹس کی غلط بیانی سے 60فیصد ویزا درخواستیں مسترد ہو جاتی ہیں: انعام رانا

ایجنٹس کی غلط بیانی سے 60فیصد ویزا درخواستیں مسترد ہو جاتی ہیں: انعام رانا

  



لاہور(سٹی رپورٹر) بیرون ملک جانے والے طالب علموں اور کاروباری افراد کو بہترین سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ ویزے کے حصول کے لیے ایجنٹس غلط بیانی کر کے لوگوں کو تنگ کرتے ہیں۔ ڈائریکٹر جولیا اینڈرانا سلیسٹرزانعام رانا کا روزنامہ پاکستان کو انٹرویو دیتے ہوئے کہنا تھا کہ جولیا اینڈ رانا سلیسٹرز کاہیڈ آفس لندن میں واقع ہے جو اپنی سہولیات پاکستان میں بھی فراہم کر رہا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ فرم بے شمار شعبوں میں ڈیل کر رہی ہے جن میں باہر کاروبار کرنا،انویسٹمنٹ کرنے میں مشورہ دینا،لوگوں کو باہر بھیجناشامل ہے جبکہ پاکستان میں یہ فرم طالب علوں کو تعلیم کے حصول کیلئے بیرون ملک بھیجوانے، ٹورازم ویزہ حاصل کرنے اور کاروبار شروع کرنے کیلئے رہنماء فراہم کرتی ہے۔ ان کااس حوالے سے مزیدکہنا تھا کہ جو لوگ ویزہ ملنے سے محروم رہ جاتے ہیں ان کے لیے اپیل دائر کرنا بھی ہمارا منشور ہے،تاہم یہاں پر لوگوں کو اس بارے میں علم ہی نہیں۔انھوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں ہم مختلف یونیورسٹیز میں سیمینار کا انعقاد بھی کروا رہے ہیں، پاکستان میں موجود لوگ مختلف ایجنٹس کے ہاتھوں دھوکہ کھاتے ہیں جن کے بعد انھیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، ایجنٹس تعلیمی ویزوں اور دیگر معاملات میں غلط بیانی کرنا اپنا پیشہ سمجھتے ہیں اور لوگوں سے زائد رقم وصول کرتے ہیں جبکہ بدلے میں کچھ نہیں ملتا۔پاکستانیوں کی جانب سے 77000 ویزہ درخواستیں دی گء جن میں سے 60فیصدایجنٹس کی غلط بیانی کی وجہ سے مسترد ہوئیں، ان کا مزید کہنا تھا کہ جولیا اینڈ رانا سلیسٹرز لوگوں کی بہتری کیلئے اپنا کام پوری ذمہ داری سے سر انجام دے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...