پاکستان میں 78فیصد کاروباری ادارے گریجوایٹس کے معیار سے ناخٰوش، تحقیق

پاکستان میں 78فیصد کاروباری ادارے گریجوایٹس کے معیار سے ناخٰوش، تحقیق

  



لاہور (پ ر) نقیبز کنسلٹنگ نے ایک تحقیق شائع کی ہے جس کا مقصد تعلیمی اداروں اور کاروباری اداروں میں ہم آہنگی پیدا کرنا ہے۔یہ رپورٹ اس بات کی اہمیت اجاگر کرتی ہے کہ تعلیمی میعار اور پڑھانے کے طریقوں میں جدت لا نا ہوگی۔اس تحقیق میں 212 کارپو ریٹ لیڈرز جن میں بزنس مالکان، سی اولیول ایگزیکٹوز اور HR لیڈرز کے جوابات قلمبند کیے گئے ہیں۔سروے میں شامل 212 کمپنیوں کا تعلق20فیصد آئی ٹی، ٹیلی کام، 16فیصد ایف ایم سی جی، مینوفیکچرنگ، 16فیصدریٹیل، فیشن، فوڈ وغیرہ، 12فیصد پروفیشنل سروسز، 9فیصد ٹریننگ، ریسرچ، ایجوکیشن اور 8فیصد بینکنگ انشورنش سے تھا۔ان کمپنیوں میں کام کرنے والے ملازمین کی تعداد 515,00 سے زائدہے۔اس موقع پر تحقیق کے مصنف محمد معظم شہباز نے اپنے خیالات کا اظہار کر تے ہوئے بتایا کہ یہ با ت کافی حیران کن تھی کہ جب میں نے انڈسٹر ی لیڈرز سے پوچھا کہ آپ کو کبھی کسی یونیورسٹی یا ہائیر ایجوکیشن کمیشن سے کسی نے اصلاحات یا رہنمائی کے کبھی لیے رابطہ کیا ہے تو 80%  کا جواب یہ تھا کہ ہمیں کبھی بھی کسی نے اس سلسلے میں رابطہ نہیں کیا گیا۔اِس تحقیق کے نتائج جو کہ کافی حیران کن تھے، 78% ایمپلائرزفریش گریجوایٹس کے معیار سے ناخوش تھے۔سینئر لیڈرز کے مطابق  گریجوایٹس دوران انٹرویو اپنے اچھے گریڈز کا دفاع نہیں کرسکتے۔ اِس کی بنیادی وجہ گریجوایٹس نے گریڈز رٹا لگا کر حاصل کیے ہوتے ہیں جب کے عملی کاروباری دنیا میں گریڈز کی بجائے کسی بھی شخص کی عملی قابلیت کے ساتھ اس کی فنی مہارت اور شخصیت کو زیادہ اہمیت دی جاتی ہے۔ 82%ایمپلایرزکے نزدیک فریش گریجوایٹس کے High Grades کوئی معنی نہیں رکھتے، ان کے نزدیک ایک انسان میں کا م کرنے کی صلاحیت اور بزنس کو سمجھنے کی صلاحیت ہونی چاہیے۔ سروے کی افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی راجہ یاسر ہمایوں سرفراز صوبائی وزیر برائے تعلیم پنجاب نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ،  یہ بات کا فی فکر اور حیران کُن ہے کہ آج کیگریجوایٹس کوآپ ایک صفحہ لکھنے کو کہیں تو اُس کے لیے مُشکل ہو جا ئے گا اور وہ صیح طر ح لکھ بھی نہیں پا ئے گا۔ تقریب سے 20 سے زائد مقررین نے اپنے خیالات کا اظہار کیا جن میں محمود صادق، ڈاکٹر محمد نطام دین، فاطمہ اسد، مارگو اے عزیز، ڈاکٹر سمیرا رحمان، ڈاکٹر ظفر اقبال قریشی، ڈاکٹر راحیل قمر اور دیگر شامل ہیں۔ سجادگان آستانہ عالیہ نقیب آباد شریف قصور، صوفی محمد نقیب الرحمان شاہ اورصوفی محمد اسد اللہ شاہ نے سپیشل مہمانان کے حوالے سے شرکت کی۔ 

مزید : علاقائی


loading...