ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری، ڈاکٹرز کا احتجاج، آج ایمرجنسی وارڈ بند کرنیکی دھمکی

ہسپتالوں کی ممکنہ نجکاری، ڈاکٹرز کا احتجاج، آج ایمرجنسی وارڈ بند کرنیکی ...

  



ملتان ( وقائع نگار) ہسپتالوں کی غیر ممکنہ نجکاری ایم ٹی آئی ایکٹ کے خلاف ڈاکٹر ز تنظیمیں دوسرے روز بھی سراپا احتجاج رہیں ہیں۔ نشتر ہسپتال میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی کال پر دوسرے روز بھی ہڑتال اور احتجاج کا سلسلہ جاری رہا۔نشتر ہسپتال میں آوٹ ڈور وارڈ کا آغاز ہوا تو دس بجے تک آوٹ ڈور وارڈ میں مریضوں کا علاج ہوتا رہا جس کے بعد ینگ ڈاکٹر نے آوٹ ڈور وارڈز بند کرا تے (بقیہ نمبر31صفحہ12پر)

ہوئے احتجاج شروع کر دیا جس کے باعث مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔مریضوں کا نہ تو علاج ہو سکا اور نہ مریضون کو میڈیسن فراہم کی جا سکیں،جبکہ شوگر کے مریض بھی بے بسی کی علامت بنے رہے جس پر مریضوں نے ڈاکٹرز اور حکومت کے رویے پر شدید برہمی کا اظہار کیا دوسری جانب ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے نشتر ہسپتال کے آوٹ ڈور وارڈ میں حکومت اور میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن ایکٹ کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ حکومت مریضوں سے مفت علاج کی سہولت چھیننا چاہتی ہے جبکہ ایم ٹی آئی ایکٹ کے نفاذ سے ڈاکٹرز کا مستقبل بھی ختم ہو جائے گا۔نشتر ہسپتال میں وائی ڈی اے کی جانب سے گزشتہ روز تو ہڑتال جاری رہی جبکہ وائی ڈی اے نے آج ہفتہ بھی آوٹ ڈور وارڈبند کرنے کا اعلان کیا۔اس طرح ایمرجنسی وارڈ بھی بند کرنے کی دھمکی دی گئی ہے۔

ڈاکٹرز احتجاج

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...