ملتان:میڈیکل سٹوروں پرممنوعہ ادویات کی فروخت کا انکشاف، کارروائی زیرو

ملتان:میڈیکل سٹوروں پرممنوعہ ادویات کی فروخت کا انکشاف، کارروائی زیرو

  



ملتان ( وقائع نگار) ملتان کے میڈیکل سٹوروں پر فارماسسٹ کی عدم دستیابی سے نان کوالیفائیڈ سٹاف کے میڈیسن دینے زے مریضوں کی بیماری اور اموات میں اضافے کا خدشہ بڑھ گیاہے۔ میڈیکل سٹوروں پر غیر تربیت یافتہ سٹاف خود نسخہ پڑھ کر سمجھنے اور مریضوں کو ادویات کے استعمال کے بارے(بقیہ نمبر39صفحہ12پر)

میں بتانے سے قاصر ہے۔ میڈیکل اسٹور پر بغیر نسخہ ممنوعہ ادویات کی فروخت بھی سرعام دھڑلے سے جاری ہے۔جبکہ محکمہ صحت اسکی روک تھام تاحال کوئی ٹھوس اقدامات عمل میں نہیں لاسکے۔واضح رہے ملتان شہر کے بیشتر علاقوں میں قائم میڈیکل سٹوروں پر نان کوالیفائیڈ سٹاف ڈیوٹی دے رہا ہے۔جن کو ڈاکٹری نسخہ تک پڑھنا نہیں آتا۔کیونکہ کمی تعلیم یافتہ ہونے کی وجہ ڈاکٹروں کا نسخہ پڑھنے سے قاصر ہے۔اور یہی وہ خاص وجہ ہے جسکی وجہ سے غلط ادویات دیکر مریضوں کو موت کے منہ میں دھکیل دیا جاتا ہے۔اور اموات کا خدشہ بڑھ جاتا ہے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ملتان شہر کے اکثر علاقوں میں قائم میڈیکل سٹوروں پر کھلے عام ممنوعہ ادویات کی فروخت دھڑلے سے جاری ہے۔شہر بھر کے نشے ملے عادی افراد نشے کے انجکشن بغیر ڈاکٹری نسخہ سے لے رہے ہیں۔جن سے نشے کے عادی موت کی وادی میں چلے جاتے ہیں۔محکمہ صحت کے مطابق نشاندہی پر میڈیکل سٹوروں پر کے خلاف کارروائی ضرور کی جاتی ہے۔

ممنوعہ ادویات

مزید : ملتان صفحہ آخر