ان رجسٹرڈ اور ٹوکن ٹیکس کی عدم ادائیگی کے خلاف کاروائی عروج پر

ان رجسٹرڈ اور ٹوکن ٹیکس کی عدم ادائیگی کے خلاف کاروائی عروج پر

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)صوبہ بھر میں ان رجسٹرڈ اور ٹوکن ٹیکس کی عدم ادائیگی کے خلاف کاروائی عروج پر، سیکرٹری و ڈی جی ایکسائز کی خصوصی ہدایت پر دو روزہ مہم اختتام پزیر،مہم کے دوران آٹھ غیر رجسٹرڈ گاڑیاں، دو سو بیس غیر رجسٹرڈ موٹر سائیکل، پانچ سو گرام ہیروئین برآمد اور پانچ ہزار سے زائد گاڑیوں سے خودساختہ نمبر پلیٹس اتار لئی گئیں۔ خیبرپختونخوا محکمہ ایکسائز نے بدھ اور جمعرات کو صوبہ بھر میں غیر رجسٹرڈ گاڑیوں اور ٹوکن ٹیکس کی عدم ادائیگی کے خلاف دو روزہ خصوصی مہم چلائی جس کے دوران تین ملین سے زائد کے ٹوکن ٹیکس کی ریکوری کی گئی جبکہ خصوصی مہم کے دوران آٹھ غیر رجسٹرڈ گاڑیوں اور دو سو بیس غیر رجسٹرڈ موٹرسائیکلوں کو بھی قبضے میں لیا گیا۔ مہم کے دوران پانچ سو گرام ہیروئین بھی برآمد کی گئی جبکہ پانچ ہزار گاڑیوں سے خودساختہ نمبر پلیٹیں بھی اتار لی گئیں۔ سیکرٹری ایکسائز ظفر علی شاہ کا کہنا ہے کہ صوبے میں موٹر وہیکل رجسٹریشن کے لئے قانون عملداری ہونی چاہئے اور اس قانون کی رو سے صوبے کے کسی بھی کونے میں چلنے والی گاڑی یہاں رجسٹر ہوگی اور یہاں کے متعلقہ دفاتر میں ٹوکن ٹیکس بھی بروقت جمع کرائیگی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اس قانون کے تحت کسی بھی گاڑی پر محکمہ ایکسائز کے جاری کردہ نمبر پلیٹس کے علاوہ دیگر خودساختہ نمبر پلیٹس کا لگانا قطعی ممنوع اور قانونی طور پر جرم ہے۔ آپریشن کی نگرانی کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل ایکسائز ٹیکسیشن سید فیاض علی شاہ کا کہنا تھا کہ وہ سرکاری حضرات جو گرین نمبرپلیٹ لگانے کے مجاز نہیں وہ اپنی گاڑی کی کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹ استعمال کریں اور یہ کہ روزانہ کی بنیاد پر کریک ڈاون جاری رہے گا اور ہر ٍضلع کے داخلی و خارجی راستوں پر ایکسائز سکواڈ کی چیک پوسٹیں قائم کردی گئی ہیں جو کہ گاڑیوں کی نقل و حمل پر نظر رکھے ہوئے ہیں، صوبے سے غیررجسٹرڈ، نان کسٹم پیڈ اور جعلی نمبر پلیٹ والی گاڑیوں کا خاتمہ ہمار مشن ہے اور مشن کیلئے ایکسائز ٹیمیں ہمہ وقت فیلڈ میں رہتی ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہماراویژن صوبے کے جاری کردہ نمبرپلیٹوں کی دیگر صوبوں میں ساکھ کی بحالی ہے جس کیلئے یہ آپریشن ناگزیر ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ جعلی نمبر پلیٹ والی گاڑیوں کی وجہ سے دیگر صوبوں میں ہماری نمبر پلیٹ والی گاڑیوں کو تنگ کیا جاتا ہے جو کہ صوبے کیلئے بدنامی کا باعث بنتی ہیں۔

رستم پولیس کاجرائم پیشہ اور

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...