اربوں روپے کہاں تقسیم ہوئے شاید حکمران بھی نہ جانتے ہوں: سرا ج الحق

      اربوں روپے کہاں تقسیم ہوئے شاید حکمران بھی نہ جانتے ہوں: سرا ج الحق

  

لاہور (آن لائن) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ احساس پروگرام سے ابھی تک اسلام آباد کا مزدور طبقہ لاعلم ہے۔ حکومت دعوے کررہی ہے کہ اس نے احساس پروگرام کے ذریعے اربوں روپے تقسیم کئے ہیں مگرآن گرؤنڈ صورتحال اس کے بالکل برعکس ہے اور اسلام آباد کے مزدور وں کو بھی یہ امدا دنہیں مل سکی۔ملک بھر میں لوگ دفتروں اور حکومتی پارٹی کے لوگوں کے پیچھے پیچھے خوار ہورہے ہیں،وزیر اعظم کو ٹائیگر فورس بنانے سے پہلے سوچنا چاہیے تھا کہ ٹائیگرز کو عام آدمی کیسے پکڑ سکے گا۔ اربوں روپے کہا ں تقسیم ہوئے شاید حکمران خود بھی نہ جانتے ہوں۔ وفاق اورسندھ کی لڑائی سے سوفیصد نقصان عوام کا ہے۔بیانات سے یہی پتہ چلتا ہے کہ ان کو عوام کی نہیں اپنے اپنے مقاصد کی تکمیل کی فکر ہے۔کیا اسلام آباد اور کراچی کے کورونا وائرس میں کوئی فرق ہے جو کراچی میں لاک ڈاؤن ناجائز اور اسلام آباد میں جائز ہے۔وفاقی حکومت ابھی تک قوم کو اعتماد میں نہیں لے سکی کہ آخر وہ کرنا کیا چاہتی ہے۔وزیر اعظم کہتے ہیں کہ لاک ڈاؤن مسئلے کا حل نہیں اور چاروں صوبوں اور اسلام آباد میں لاک ڈاؤن بھی جاری ہے۔کیا اشرافیہ اور مافیا ز حکومت سے زیادہ طاقتور ہیں جو حکومت کو لاک ڈاؤن پر مجبور کررہے ہیں۔ان خیالات کا اظہا رانہوں نے منصورہ میں کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ وزیر اعظم لاک ڈاؤن کے خلاف بیانات دے رہے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ عوام پر اس سے بڑا ظلم نہیں مگر جن صوبوں میں ان کی پارٹی کی حکومتیں ہیں وہاں بھی اسی طرح لاک ڈاؤن ہے جس طرح دوسرے صوبوں میں۔وزیر اعظم کے بیانات نے تو عوام کو کنفیوز کردیا ہے اور لوگ پوچھ رہے ہیں کہ حکومت کرنا کیا چاہتی ہے۔آزادیٓ صحافت کے عالمی دن کے موقع پر ایک بیان کے ذریعے اپنے پیغام میں امیرِ جماعتِ اسلامی پاکستان سراج الحق نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت آزادی صحافت کی اقدار کی پیروی کرے۔حکومت صحافیوں کے مسائل کے حل اور ان کی فلاح و بہبود کے لیے اقدامات کرے۔سینیٹر سراج الحق کا یہ بھی کہنا ہے کہ ا?زادی? صحافت کے لیے قربانی دینے والے شہید صحافیوں کو خراجِ عقیدت پیش کرتے ہیں۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -