ملک کی 60فیصد آباد ی نوجوانوں پر مشتمل، قوت مدافعت سے کورونا نہیں پھیلا، طبی ماہرین

    ملک کی 60فیصد آباد ی نوجوانوں پر مشتمل، قوت مدافعت سے کورونا نہیں پھیلا، ...

  

لاہور(جاوید اقبال+لیاقت کھرل)پاکستان میں چینی ڈاکٹرز اور پاکستان طبی ماہرین نے ایک بار پھر امید ظاہر کی ہے کہ کورونا وبا عارضی چیلنج ہے۔پاکستان اس پر جلد قابو پانے میں کامیاب ہو جائے گا۔ لوگوں کو اپناطرز زندگی تبدیل کرنا ہوگا۔ چینی ڈاکٹرز اور پاکستانی طبی ماہرین نے کہا کہ پاکستان میں دیگر ممالک کی نسبت کورونا وائرس سے شرح اموات کم ہیں۔ شوگر، ہائی بلڈ پریشر،دل اور پھیپھڑوں کے مرض میں مبتلا افراد کو کورونا نے اپنی لپیٹ میں جلدی لیا۔ چینی ڈاکٹرز کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کی 60 فیصد آبادی نوجوانوں کی ہے۔ قوت مدافعت بہتر ہونے کی وجہ سے نوجوانوں میں اموات کی شرح کم رہی ہیں۔اور اس میں نوجوانوں کے علاج و معالجہ میں بھی آسانی رہی ہے۔ پاکستان طبی ماہرین میں پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز،پروفیسر ڈاکٹر محمد عمران،پروفیسر ڈاکٹر الفرید ظفر،پروفیسر ڈاکٹر محمد اشرف نظامی،پروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل سمیت پروفیسرڈاکٹر جاوید اکرم اور پروفیسر ڈاکٹر غیاث النبی طیب نے کہا ہے کہ شوگر،ہائی بلڈ پریشر سمیت دل اور پھیپھڑوں کے امراض میں مبتلا افراد کو زیادہ سے زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ ماہرین نے بتایا کہ چین کی جانب سے پاکستان کو دی جانیوالی طبی امداد سے بھی کرونا وباء کو روکنے میں مدد ملی ہے۔ ایڈوائزری گروپ پنجاب کے وائس چیئرمین ڈاکٹر اسلم خان کا کہنا ہے کہ پاکستان کے لوگوں پر اللہ کا خاص کرم ہے اور اللہ کا شکر ہے کہ پاکستانیوں میں انکے لائف سٹائل کی وجہ سے قوت مدافیت عام ممالک کے عوام کے مقابلے سے زیادہ ہے یہی وجہ ہے کہ یہاں کرونا وائرس کی خطرناکی کم ہے۔ پروفیسر اسد اسلم نے کہا کہ انشاء اللہ آئندہ دنوں میں کرونا کے کیسز میں واضح کمی نظر آئے گی۔اس میں ضرورت اس بات کی ہے کہ عوام اپنے طرز زندگی بدلیں اور لاک ڈاؤن کا زیادہ سے زیادہ احترام کریں۔

ماہرین رائے

مزید :

صفحہ اول -