کورونا سے ملکی معیشت کو شدید نقصان، آئی ایم ایف سے رجوع کا حتمی فیصلہ

کورونا سے ملکی معیشت کو شدید نقصان، آئی ایم ایف سے رجوع کا حتمی فیصلہ

  

اسلام آباد(آن لائن)کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کے ملکی معیشت پر بدترین اثرات مرتب ہوئے ہیں جس کی وجہ سے سال2020-21کیلئے بجٹ بنانا مشکل ہو گیا ہے۔ذرائع نے وزارت خزانہ کے حوالے بتایا کہ وفاقی اور صوبائی محصولات میں 5 ہزار ارب روپے کے مجموعی خسارے کا سامناہے،اس مجموعی خسارے کا کوئی توڑ نظر نہیں آرہا۔حکومت نے آئی ایم ایف سے نئے پیکیج پر مذاکرات کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے،یہ فیصلہ مانیٹری اینڈ فسکل پالیسی کوآرڈینیشن بورڈ کے گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں کیاگیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ تنخواہیں دینا صوبوں اور وفاق کیلئے سب سے بڑا چیلنج بن جائے گا،نئے پیکیج کے ذریعے سہ ماہی بنیادوں پر تنخواہوں کیلئے رقوم یقینی بنانے کا فارمولا تشکیل دیا جائے گا،اب تک جتنے عالمی پیکج ملے ان کے استعمال کے اعدادوشمار پر بھی تبادلہ خیال ہو گا۔ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ مارکیٹ میں پرچون ڈسٹری بیوشن اور صنعتی گراوٹ کے گراف پیش کئے جائیں گے،نیا پیکج ان گرافوں کے تجزیے کے بعد سامنے آنے کی امید ہے۔

آئی ایم ایف مذاکرات

مزید :

صفحہ اول -