مرحلہ وار کا روبار صنعتیں کھولنے کی اجازت دی جائے: وفاقی چیمبر 

مرحلہ وار کا روبار صنعتیں کھولنے کی اجازت دی جائے: وفاقی چیمبر 

  

اسلام آباد (  پ ر) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر محمد احمد وحید نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اسلام آباد میں مرحلہ وار کاروبار اور صنعتیں کھولنے کی اجازت دی جائے تا کہ مزدورں کو روزگار ملے اور کاروباری طبقے کو مشکلات کم ہوں۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر کے ممالک کرونا وائرس کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ یورپ اور امریکہ اس موذی وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد بہت زیادہ ہے لیکن اب وہ ممالک بھی لاک ڈاؤن میں نرمی کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ، کے پی کے اور پنجاب میں کنسٹریکشن انڈسٹری سمیت دیگر صنعتوں کو کام کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے لیکن اسلام آباد میں ابھی تک کاروبار اور صنعتیں بند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس صورت حال کی وجہ سے لیبر بے روزگار ہو رہی ہے جبکہ بجلی و گیس کے کمرشل بل بھی ابھی تک موخر نہیں کئے گئے۔ اگر یہی صورتحال رہی تو بہت سی کارپوریٹ کمپنیاں ڈیفالٹ کر سکتی ہیں جس کے پاکستان کی معیشت پر دوررس منفی نتائج مرتب ہوں گے۔محمد احمد وحید نے حکومت پر زور دیا کہ محکمہ صحت کی طرف سے جاری کردہ قوائد و ضوابط کے تحت اسلام آباد میں فیکٹریاں اور کاروبار کھولنے کی اجازت دی جائے اور خاص طور پر وہ صنعتیں جن کی لیبر فیکٹریوں کے اندر ہی رہائش پذیر ہے ان کو فوری طور پر پیداواری سرگرمیاں شروع کرنے کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ فیکٹریاں اور کاروبار بند ہونے کی وجہ سے صنعتکار وتاجر کب تک لیبر، ملازمین اور بجلی و گیس کے بلوں کا بوجھ برداشت کرتے رہے گے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ دنوں ایک ملاقات میں وفاقی وزیر برائے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ اسد عمر او ر وفاقی وزیر برائے انڈسٹریز محمد حماد اظہر کو صورتحال سے آگاہ کیا گیا تھا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر جلد ہی صنعتوں اور کاروبار کو نہ کھولا گیا تو ایسا بحران پیدا ہونے کا خدشہ ہے جس پر قابو پانا ممکن نہیں رہے گا۔ لہذا انہوں نے پرزور مطالبہ کیا کہ تمام احتیاطی تدابیر اپنا کر دیگر صوبوں کی طرح اسلام آباد میں بھی صنعتوں اور کاروبار کو فوری طور پر کھولنے کی اجازت دی جائے تا کہ مزدوروں کو روزگار ملے اور معیشت کا پہیہ دوبارہ چلنا شروع ہو جائے۔ 

مزید :

کامرس -