قلم کو کنٹرول کرنیکی حکومتی کوششیں نامنظور‘حافظ حسین احمد

  قلم کو کنٹرول کرنیکی حکومتی کوششیں نامنظور‘حافظ حسین احمد

  

ڈیرہ غازیخان (سٹی رپورٹر):جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان حافظ حسین احمد نے ''آزادی صحافت کے عالمی دن'' کے موقع پر ڈی جی خان کے صحافیوں سے خصوصی گفتگو کر تے ہو ئے کہا ہے کہ مارشل لاء دور سے زیادہ آج صحافت کو مشکلات اور چیلنجز درپیش ہیں اقتدار میں رہنے والی جماعت ہی آزادی صحافت کے لیے سب سے بڑا خطرہ بن جاتی ہے قلمکاروں کی ''قلم'' کو کنٹرول کرنے کے لیے ان کے سر ''قلم'' کرنے کی کوشش کی جاتی رہی ہے(بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

اشتہارات کی بندش، واجبات کی عدم ادائیگی، میڈیا ہاوسز کے مالکان اور کارکنان کی گرفتاری ان پر مقدمات انتہائی حد تک بڑھتے جارہے ہیں صحافت ریاست کا اہم ستون ہے اپوزیشن کی ہر جماعت آزادی صحافت کی علمبردار ہوتی ہے جبکہ اقتدار میں آکر وہی جماعت آزادی صحافت کے لیے سب سے برا خطرہ بن جاتی ہے لکھاری اورصحافی کے قلم کو کنٹرول کرنے کے لیے لالچ اور دھونس اگر کام نہیں آتے تو پھر قلمکار کے سر کو قلم کرنے کی کوشش کی جاتی ہے میڈیا ہاوسز کو کنٹرول کرنے اور الیکٹرانک و پرنٹ میڈیا پر اپنا تسلط قائم کرنے کے لیے آج جس انداز میں حربے استعمال کئے جارہے ہیں وہ انتہائی قابل مذمت ہیں انہوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کی اس آزمائش کی گھڑی میں بھی سڑکوں پر احتجاج کرتے ہوئے آل صحافت ہی نظر آتے ہیں صحافت کو کنٹرول کرنے کے لیے حکمران اطلاعات کے شعبوں میں نت نئی تبدیلیاں اس لیے کررہے ہیں تاکہ وہ صحافت کے حوالے وہ تمام مقاصد مکمل حاصل کئے جاسکیں وزارت اطلاعات میں تیسری تبدیلی ”تبدیلی سرکار“ کا بڑا کارنامہ نظر آتا ہے لیکن کل کے عہدیداروں کو فارغ کرتے وقت اشتہارات میں بدعنوانی کا الزام حکومت ہی لگا رہی ہے عجیب ستم ظریفی ہے کہ دواؤں کا اسکینڈل ہو چینی و آٹے کی ذخیرہ اندوزی ہو ناجائز سبسڈی ہو یا اشتہارات میں کمیشن کا معاملہ ہو ملوث عناصر کو عہدوں سے فارغ کرنے یا اس میں تبدیلی ہی کو سزا تصور کیا جارہا ہے غیر منتخب مشیروں اور ترجمانوں کی بھرمار کے باوجود حکمران پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا اور سوشل میڈیا پر اپنے نمائشی کارکردگی سے مطمئن نظر نہیں آتے حافظ حسین احمد توقع ظاہر کی ہے کہ قلم کی آبرو کو قائم رکھنے والے قلمکار کالے دھندے کرنے والوں کے کرتوت قلمبند اور فلمبند کرتے رہیں گے پارٹی کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات نے صحافت کی مکمل آزادی اور ان کے خلاف انتقامی کاروائیوں کی مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ فوراً ان اقدامات پر نظر ثانی کی جائے۔

حافظ حسین احمد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -