سکیورٹی عملہ، معطل افسروں کو بچانے کیلئے کیس گول کرنیکی کوشش

  سکیورٹی عملہ، معطل افسروں کو بچانے کیلئے کیس گول کرنیکی کوشش

  

کہروڑ پکا (نما ئندہ خصو صی)کرو نا مریض فرار ہونے پر ڈیوٹی پر موجود عملہ معطل کردیا گیا انکوا ئری شروع ہوگئی تفصیل کے مطا بق سپیشل ایجو کیشن میں قا ئم قرنطینہ میں سے ایک کرو ناکے مر یض وقاص پٹھا ن ولد عبد العزیز سکنہ با جوڑ ایجنسی جو تبلیغی مر کز سے کرونا ٹسٹ پا زیٹو آ نے کی وجہ سے لا یاگیا تھا کو اسلام آ باد سے ایک شخص جس کا نام بلال بتا یا جا تا ہے کسی اہم شخصیت کی سفارش کروا کر پو لیس تھا نہ سٹی آ یا جہاں پر محرر مظہر ریحان (بقیہ نمبر14صفحہ6پر)

نے اس سے مبینہ طور پر ڈیلنگ کی مظہر ریحان بلال نامی شخص کی گاڑی میں قرنطینہ گئے جہاں پر مبینہ طور پر اعلیٰ آ فیسران کی ہدا یت پر وقاص پٹھان کوغیر محسوس طر یقے سے قرنطینہ سے با ہر نکل دیا گیا اور وہ بلا ل کی ہی گاڑی میں اسلام آ باد پہنچ گیا 4روز بعد محکمہ صحت کے ڈپٹی ڈی ایچ او رشید انجم نے گنتی کی تو کرونا کا ایک مر یض کم تھا جس پر اس نے ایس ڈی پی او عابد کو آ گاہ کیا مگر اس نے تسلیم کر نے سے انکار کر دیا اور کہا کہ مر یض48ہی تھے مگر رشید انجم کے اسرار پر بھی پو لیس نے معا ملہ گول کر نے کی کو شش کی جس پر معا ملہ ڈی سی لو دھراں کے نو ٹس میں لا یا گیا ڈی سی کی ہدا یت پر 1122ریسکیو کا ریکارڈ چیک کیا گیا کیو نکہ تبلیغی مر کز سے کرو نا پا زیٹو آ نے وا لے 49مر یضوں کو 1122نے ہی قرنطینہ شفٹ کیا تھا ریکارڈ میں 49مر یض ہی تھے پھر فرار مر یض وقاص پٹھان کا پتہ چلا کہ وہ فرار ہو گیا ہے کیو نکہ سیکورٹی کی ذمہ داری پو لیس کی تھی ڈی پی او نے تحقیقات کا حکم دے دیا ڈی ایس پی عا بد نے تحقیقات کیں تو معلوم ہوا کہ مظہر ریحان محررکسی کیسا تھ وقاص پٹھان کو ملنے کے لیے آ یا تھاجس پر ڈی پی او کے حکم پر مظہر ریحان کو حراست میں لے لیا گیا مظہر ریحان کی معلو مات کی رو شنی میں میں ایس ایچ او تھا نہ صدر عارف شاہ کی قیادت میں ٹیم اسلام آ باد گئی جہاں پر پو لیس ذرا ئع کے مطا بق کرو نافرار مر یض وقاص پٹھان کو پکڑ لیا گیا اور وہ اب پمز اسلام آ باد میں ہے جبکہ دو سراملزم بلال جو اس کو فرار کر وا کر لے گیا تھا کو پو لیس پکڑ نے کی کو شش کر رہی ہے مگر وہ لا پتہ ہے جبکہ مبینہ با وثوق ذرا ئع سے معلوم ہوا ہے وقاص پٹھان اور بلال دو نوں ہی لا پتہ ہیں اور مظہر ریحان کو سفارش کر نے والا شخص پو لیس کی ٹیم کوساتھ لیکر ان کی بر آ مد گی کے لیے چھا پے لگوا رہا ہے اور پو لیس ٹیم ابھی تک اسلام آ باد سے وا پس نہیں آ ئی ہے ڈی پی او کے حکم پر قر نطینہ میں سیکورٹی پر تعینات 6افراد ن میں اے ایس ائی مختیار،تصور علی،حق نوازشفٹ دوئم میں ہیڈ کا نسٹیبل احتشام،خالد شا ہین،محمد کا شف،محررمظہر ریحان کو معطل کر دیا ہے اور ان کے خلاف تحقیقات کی جا رہی ہیں قر نطینہ میں نیا عملہ تعینات کر دیا گیا ہے قر نطینہ میں لمبی دیواریں اور ان پر خاردار تاریں لگی ہو ئی ہیں ماسوا ئے دروازے کے فرار کسی بھی طرح ممکن نہیں ہے قر نطینہ ایس او پیزسیکورٹی کے مطا بق ایلیٹ فورس کی گاڑی بھی رات کو ارد گرد گشت کرے گی مبینہ ذرا ئع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے اس معا ملہ میں ملوث پو لیس آ فیسر کو بچا نے کے لیے اعلیٰ حکام کی ہدا یت پر اس کیس کو گول کر دیا گیا ہے زیر حراست تمام افراد کو بغیر کسی کاروا ئی کے معطل کر کے گھر وں کوبھیج دیا گیا ہے اور پو لیس ٹیم بھی نا کام وا پس آ رہی ہے

کوشش

مزید :

ملتان صفحہ آخر -