غازی گھاٹ: فوڈ سنٹر پر لوٹ مار کا انکشاف

غازی گھاٹ: فوڈ سنٹر پر لوٹ مار کا انکشاف

  

قصبہ گجرات(نامہ نگار)غازی گھاٹ فوڈ سنٹر پر گندم کٹوتیوں کا سلسلہ عروج ہے جس کی وجہ سے کسانوں نے مجبوراً مڈل مین سے رابطہ کرلیا ہے سنٹر انچارج گلفام افضل کا اپنے عملے کے زریعے فی گاڑی دو ہزار روپے وصولی(بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

کا انکشاف کٹوتیوں کے ساتھ ساتھ رشوت کا بازار بھی گرم کر رکھا ہے پیسے نہ دینے والے کسانوں کی گاڑیوں کا ماسچر اور باریک گندم کا بہانا بنا کر زلیل کرنا معمول گورنمٹ کے شیڈول کے مطابق پلاسٹک تھیلہ میں بمائے تھیلہ گندم کا وزن 50.115 کلو اور جیوٹ بوری گندم کا وزن بمائے بوری 101.100کلو گرام ہے جبکہ یہاں پر تھیلہ 51کلو اور بوری 102 کلو وزن وصول کیا جانے لگا وزن نہ دینے کی صورت میں کٹوتیاں کر لی جاتی ہیں کسانوں کے مطابق کئی بار ڈی ایف سی مظفر گڑھ فرخ شہزاد کو اس بارے آگاہ کیا لیکن انھوں نے توجہ نہ دیتے ہوئے بات کو ٹال کر دیا کئی کسانوں نے گورنمنٹ کی جاری کردہ ہیلپ لائن نمبر پر فون کئے جن کی ڈی ایف سی مظفرگڑھ کال آئی انھوں نے بجائے اپنے عملے سے پوچھ گوچھ کے الٹا یہ کہ کر فون بند کر دیا کہ اگر آج کے بعد دوبارہ ہیلپ لائن پر فون کیا تو آپ کی گندم نہیں اتاری جائے گی کسانوں محمد سجاد بھٹہ محمد اکبر چانڈیہ ملک نزیر احمد ویرڑ ملک مجاہد چوہدری رضوان محمد وحید عبدالسبوح رانا لیاقت محمد اکبر جمال احمد خلیل سپرا حاجی محمد صادق نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کرپٹ عملے کا فوری طور پر تبادلہ کر کے ہمیں استحصال سے بچایا جائے۔انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -