لاک ڈاﺅن آہستہ آہستہ کھولیں گے ،ٹائیگر فورس ایس او پیز کی آگاہی فراہم کرے گی ، وزیراعظم عمران خان کا رضاکاروں کیلئے خصوصی پیغام

لاک ڈاﺅن آہستہ آہستہ کھولیں گے ،ٹائیگر فورس ایس او پیز کی آگاہی فراہم کرے گی ...
لاک ڈاﺅن آہستہ آہستہ کھولیں گے ،ٹائیگر فورس ایس او پیز کی آگاہی فراہم کرے گی ، وزیراعظم عمران خان کا رضاکاروں کیلئے خصوصی پیغام

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان نے اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ لاک ڈاون کو آہستہ آہستہ کھولیں گے، جوشرائط ہم رکھ رہے ہیں اس پر اگر لوگوں عمل نہ کیا تو خدشہ ہے کہ کورونا تیزی سے پھیلے گا، کورونا پھر سے پھیلاتو اس کا خدشہ یہ ہے کہ ہمیںپھر سے لاک ڈاﺅن پر جانا پڑے گا، ٹائیگر فورس لوگوں میں آگاہی فراہم کرے گی،ٹائیگرفورس انتظامیہ سے مل کرکام کرےگی، ٹائیگرفورس نے بےروزگارہونیوالوں کی رجسٹریشن کرنی ہے،مستحق بےروزگاروں کواحساس پروگرام سے کیش دیاجائےگا، ٹائیگرفورس رضاکارانہ فورس ہے،یہ پیسے اکٹھے نہیں کرےگی، ٹائیگرفورس مقامی انتظامیہ کےساتھ مل کرکام کرے گی، ٹائیگرفورس کوتنخواہ نہیں ملے گی۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کیلئے پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ میں سب سے پہلے آپ کو تھوڑا سا بیک گراونڈ بتانا چاہتاہوں کہ جب میں شوکت خانم کیلئے پیسے اکھٹے کرنے کیلئے نکلا تو بہت زیادہ پیسہ اکھٹا کرنا تھا ، مجھے سمجھ نہیں آئی کہ اتنے کیسے اکھٹے کروں گا،تب کسی نے کہا کہ سکول کے بچوں کو اپنے ساتھ ملائیں کیونکہ اس وقت میں کرکٹ کھیلتا تھاتو سکول کے بچے مجھے کرکٹ کی وجہ سے سب سے زیادہ فالو کرتے تھے ۔

عمران خان نے کہا کہ میں نے ”عمران ٹائیگر فورس“ بنائی ، یہ ہمارے سکول کے بچے تھے جو ٹائیگر بنے ، پیسے اکھٹے کیے ، اور جب وہ بچے عوام میں گئے تو اس وقت اس سے شہرت ملی ، اس شہر ت کی وجہ سے ہم اتنا زیادہ پیسہ اکھٹاکر سکے اور پاکستان کا پہلا کینسر ہسپتال بنایا ، وہ ہسپتال جو آج تک 75 فیصد کینسر کے مریضوں کو مفت علاج فراہم کر رہاہے ، سب سے مہنگا علاج کینسر کا ہے ۔اس لیے میں نے سوچا کہ آج ایک اور ٹائیگر فورس بناتے ہیں جو ہمارے ملک کی اس مشکل وقت میں مدد کریں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ سب سے پہلے ہم نے آہستہ آہستہ لاک ڈاﺅن کو کھولنا ہے ، لاک ڈاﺅن سے بہت سے لوگ متاثر ہو چکے ہیں ، نوکریا ں چلی گئیں ِ، دیہاڑی دار مشکل میں پڑ گئے ہیں ، اس لیے ہم لاک ڈاﺅن کھولیں گے تاکہ لوگوں کو نوکریاں واپس ملیں ۔ان کا کہناتھا کہ اگر ہم نے ایسا لاک ڈاﺅن کھول دیا جہاں لوگ جمع ہونا شروع ہو گئے اور جوشرائط ہم رکھ رہے ہیں اس پر اگر لوگوں عمل نہ کیا تو خدشہ ہے کہ کورونا تیزی سے پھیلے گا، کورونا پھر سے پھیلاتو اس کا خدشہ یہ ہے کہ ہمیں پھر سے لاک ڈاﺅن پر جانا پڑے گا۔

عمران خان نے ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کو ذمہ داری سونپتے ہوئے کہا کہ ”آپ نے اپنی یونین کونسل اور امحلوں کے اندر لوگوں کو ایس اوپیز کے بارے میں آگاہی فراہم کرنی ہے اور شعور پیدا کرنا ہے ، جس طرح مسجدوں میں شرائط رکھیں ہیں کہ اگر نماز پڑھنے جانا ہے تو فاصلہ رکھیں ، یہ ٹائیگرز کا کام ہو گا کہ لوگوں کو آگاہ کریں کہ مسجد میں جاتے ہوئے کن شرائط پر عمل کرناہے ، اسی طرح اگر دکانیں کھل رہی ہیں تو شرائط کے بارے میں آگاہ کرنا ہے ۔

وزیراعظم نے کہا کہ جب ہم فیکڑیاں کھولیں گے تواس میں ذمہ داری منیجر کی ہو گی لیکن عوام کو ٹائیگر فورس آگاہی فراہم کرے گی ، یہ ہمارے لیے سب سے بڑا چیلنج ہو گا ایک طرف لوگوں کورونا سے بچائیں اور دوسری طرف یہ بھی دیکھیں کہ بیروزگاری اور بھوک سے لوگ نہ مریں ،اس کام کیلئے ٹائیگر فورس آگاہ فراہم کرے گی کہ کن شرائط پر لاک ڈاﺅن کھولا جارہاہے ۔

وزیراعظم عمران خان کا کہناتھا کہ ٹائیگرفورس انتظامیہ سے مل کرکام کرےگی، ٹائیگرفورس نے بےروزگارہونیوالوں کی رجسٹریشن کرنی ہے،مستحق بےروزگاروں کواحساس پروگرام سے کیش دیاجائےگا، ٹائیگرفورس رضاکارانہ فورس ہے،یہ پیسے اکٹھے نہیں کرےگی، ٹائیگرفورس مقامی انتظامیہ کےساتھ مل کرکام کرے گی، ٹائیگرفورس کوتنخواہ نہیں ملے گی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -