سندھ حکومت کاوفاق سے کھجور کی ایکسپورٹ کھولنے کا مطالبہ

سندھ حکومت کاوفاق سے کھجور کی ایکسپورٹ کھولنے کا مطالبہ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت نے وفاق سے کھجور کی ایکسپورٹ کھولنے کا مطالبہ کیاہے۔سندھ کے وزیر زراعت اسماعیل راہونے پیرکوجاری اپنے بیان میں کہاکہ وفاقی حکومت کھجور کی ایکسپورٹ کے لیے ضروری اقدامات کرے۔کھجور کی ایکسپورٹ بند ہونے سے کسانوں کا بھاری نقصان ہو رہا ہے۔انہوں نے سوال کیاکہ کیا وفاقی حکومت اس برس کسانوں کو نقصان سے بچانے کے لئے، کھجور برآمد کرنے کے لیے کچھ کرے گی؟۔اسماعیل راہونے کہاکہ ضلع خیرپور میں اعلی معیارکی کھجورپیداہوتی ہے یہ کھجور ملکی ضروریات کے ساتھ متحدہ عرب امارات، نیپال،اومان، انڈیا اور دیگر ممالک درآمد کی جاتی ہے۔کھجور کی ایکسپورٹ سے ملک کروڑوں ڈالر زرمبادلہ کماتا ہے۔سال 2016 میں 103 ملین ڈالر، 2017 میں 108 اور 2018 میں 113 ملین کی ڈالر کی کھجور درآمد ہئی۔وزیرزراعت سندھ نے کہاکہ جو2019میں سلیکٹڈ کے آتے ہی 71 ملین ڈالر کی رہ گئی۔پچھلے برس یعنی 2020 میں اور کم ہو کر بہت کم درآمد ہو سکی۔اسماعیل راہونے کہاکہ پچھلے دو سال سے سندھ کی کھجور کے کاشتکاروں کا برا حال ہے۔عمران خان حکومت جان بوجھ کر سندھ کی زراعت کو نقصان پہنچا رہی ہے۔وزیرزراعت سندھ نے کہاکہ کھجور کے کاشتکاروں کو خدشہ ہے کہ وفاقی حکومت ان کے ساتھ بھی پیاز اور ٹماٹر کے کاشتکاروں والا حشر کرے گی۔انہوں نے کہاکہ کھجورکے بیوپاریوں کو اسٹاک ایکسپورٹ کرنے میں کافی مشکلات کاسامناہے

مزید :

صفحہ اول -