ایم ڈی پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن  ٹیم کی ورلڈ بینک نمائندوں سے آن  لائن میٹنگ،مختلف امور پر بحث

ایم ڈی پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن  ٹیم کی ورلڈ بینک نمائندوں سے آن  لائن ...

  

  ملتان (نیوز رپورٹر) ایم ڈی پنجاب ایجوکیشن فانڈیشن اسد نعیم کی سربراہی میں ورلڈ بنک کے وفد سے آن لائن میٹنگ ہوئی جس میں ورلڈ بنک کے ٹیم لیڈر Koen Geven، تازین فصیح اور عائشہ طاہر نے شرکت کی۔ جبکہ پی ایم آئی یو ڈیپارٹمنٹ کے ریسرچ (بقیہ نمبر26صفحہ6پر)

اینڈ پالیسی ونگ کے ہیڈ عبدالمفتی بھی میٹنگ میں شریک ہوئے۔ میٹنگ کے آغاز میں ورلڈ بنک کی طرف سے نمائندگی کرتے ہوئے Koen Geven نے کہا کہ ورلڈبنک پنجاب میں PESP-4 کے ذریعے آٹ آف سکول چلڈرن اور لرننگ پاورٹی پر کام کرنا چاہتا ہے۔ Koen Geven  نے کہا کہ 2018کے ڈیٹا کے مطابق پاکستان میں 18.7ملین آٹ آف سکول چلڈرن اور صوبہ پنجاب میں آٹ آف سکول بچوں کی تعداد تقریبا 9.7ملین ہے۔ ان تمام بچوں کو سکولوں میں لانے کے لیے بہترین حکمت عملی کی ضرورت ہے اور پیف اس میں اہم کردار ادرکر سکتا ہے۔ منیجنگ ڈائریکٹر پیف اسد نعیم نے کہا کہ پاکستان میں تعلیم کے فروغ کے لیے ورلڈ بنک کا کردار ہمیشہ سے قابل ستائش رہا ہے اور PESP-4کے ذریعے آٹ آف سکول چلڈرن اور لرننگ پاورٹی پر مزید کام کیا جا سکتا ہے۔ ایم ڈی پیف نے کہا کہ پنجاب ایجوکیشن فانڈیشن پہلے ہی پنجاب کے غریب اور مستحق بچوں تک معیاری تعلیم کے فروغ کے لیے کوشاں ہے جبکہ پرائمری اور مڈل لیول کے سکولوں کی تعداد بڑھا کر آٹ آف سکول بچوں کو سکولوں میں لایا جا سکتا ہے۔ ایم ڈی پیف نے کہا کہ اگر پیف کو مالی طور پر سپورٹ کیا جائے تو پیف کم خرچ میں آٹ آف سکول چلڈرن اور لرننگ پاورٹی پر اپنا بہترین کردار ادا کر سکتا ہے۔ ورلڈ بنک کے ٹیم لیڈر Koen Geven نے کہا کہ پیف کی تعلیمی خدمات قابل تعریف ہیں اور ورلڈ بنک ان کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے تمام تعلیمی سٹیک ہولڈرز سے اس پر مشاورت کی جائے گی اور بہت جلد اس پر عملی طور پر کام شروع کیا جائے گا۔ 

میٹنگ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -