نہریں بند، پنجاب میں غذائی قلت کا خدشہ متعلقہ ادارے خاموش، کسانوں کا احتجاج

نہریں بند، پنجاب میں غذائی قلت کا خدشہ متعلقہ ادارے خاموش، کسانوں کا احتجاج

  

 رحیم یارخان (بیورو رپورٹ)نہری پانی کی کمی سے پنجاب میں غذائی (بقیہ نمبر15صفحہ6پر)

قلت کا خدشہ بڑھ گیا ہے بارشیں شروع ہونے کے باوجود بھی صوبہ پنجاب کو اسکا پورا حق نہیں مل رہاپنجاب بھر میں ایکم اپریل سیکاٹن سوئینگ سیزن شروع ھے۔مگر پہلے ارسا اتھارٹی کا بہانہ بنایا کہ ڈیموں میں پانی کی کمی ھے پھر بھل صفائی مہم اور ھیڈ پنجند کے مین گیٹ مرمت کرنے کا بہانہ بنا کر 20دن لیٹ ھیڈ پنجند سے 4500 کیوسک پانی ریلیز کرنیکا ارسا اتھارٹی نے حکم جاری کیا اب رحیم یار خان کا ھیڈ پنجند سے 9200 کیوسک پانی کا شیئر بتایا جارھاھے اور احسان کرتے ہوئے 11000کیوسک پانی ریلیز کیا جا رھا ھے جبکہ سیزن ربیع و خریف میں 16000 کیوسک سے 26000 کیوسک پانی کا شیئر بنتا ھے۔ابھی بھی 5000 کیوسک پانی کی ناانصافی و کمی ھیڈ پنجند سے کی جارھی ھے۔  نہری پانی چوری میں ملوث کسانوں کے ساتھ ساتھ  متعلقہ عملہ پر بھی FIR دیں تاکہ ٹیل کے فارمرز  تک پانی پہنچ سکے۔

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -