کچہری روڈ، تین گنبد،دو مینار جامع مسجد وزیر خان کی پہچان 

کچہری روڈ، تین گنبد،دو مینار جامع مسجد وزیر خان کی پہچان 

  

 ملتان (سٹی رپورٹر)کچہری روڑ پر بابر مارکیٹ کے بالمقابل واقع جامع مسجد وزیر خان تقریباًساڑھے تین سو سالہ قدیمی مسجدی ہے جس کی بنیاد 1650میں ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقے کلاچی سے آئے ہوئے نواب وزیر خان گنڈا پور نے رکھی تھی یہ مسجد (بقیہ نمبر32صفحہ6پر)

دس مرلہ اراضی پر واقع ہے مسجد ایک بڑے ہال اور صحن پر مشتمل ہے جس کے اوپر تین گنبد اور دو مینار ہیں جامع مسجد وزیر خان آج بھی اسی حالت میں موجود ہے جس طرح اسے ماضی میں بنایا گیا تھا 1990میں مسجد کے فرش، وضو خانہ کی مرمت کی گئی اور واش رومز بنائے گئے تھے جس پر دولاکھ روپے لاگت آئی تھی، مسجد کے ارد گردرہائشی آبادی میں اکثریت گنڈاپور برادی کی ہے جبکہ مسجد کی انتطامیہ بھی گنڈا پور فیملی سے تعلق رکھتی ہے مسجد وزیر خان میں ایک مدرسہ بھی قائم ہے جس میں بچوں کو ناظرہ قر آن مجید کی تعیم دی جاتی ہے جامعہ مسجد وزیر خان میں پانچ وقت نماز کے علاوہ جمعہ اور عیدین کی نمازیں بھی ادا کی جاتی ہے مسجد میں تقریا ً500نمازیوں کی گنجائش موجود ہے محکمہ آثار قدیمہ نے مسجد کی جی کئی فٹ موٹی بنیادوں اور دیوالوں سے اندازہ لگایاہے کہ یہ مسجد وزیر خان 17ویں صدی میں تعمیر کی گئی ہوگی اس مسجد کی تعمیر میں چھوٹی سرخ اینٹوں اورماش کے مصالحے سے تعمیر کی گئی تھی۔

مسجد وزیر خان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -