پاکستان کیخلاف یورپی یونین میں قرارداد، ریلیف چھن جانے کا خدشہ

پاکستان کیخلاف یورپی یونین میں قرارداد، ریلیف چھن جانے کا خدشہ

  

  ملتان (سٹاف رپورٹر)   یورپی یونین پارلیمنٹ کی طرف سے پاکستان کو2014ء میں ملنے والے ”جی ایس پی پلس“ کے ذریعے  پاکستان کی تقریباً پچیس فیصد کاٹن ایکسپورٹس یورپی یونین کو ڈیوٹی فری ہورہی ہیں اب یورپی یونین میں پاکستان کے خلاف پاس(بقیہ نمبر51صفحہ7پر)

 ہونے والی قرار داد سے یہ امکان ہے کہ پاکستان سے یہ سٹیٹس چھن سکتا ہے اور پاکستان پر ڈیوٹی کی صورت میں بھاری بوجھ پڑ سکتا ہے یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ  اور یہ اسٹیسٹس چھن جانے سے پاکستان معاشی بحران میں مبتلا ہو سکتا ہے اس لئے حکومت پاکستان کو  بہترین خارجہ پالیسی سے یورپی یونین کو یہ فیصلہ کرنے سے باز رکھنا ہوگا  تاکہ پچھلے کچھ عرصے سے پاکستان کو ملنے والا معاشی استحکام کا تسلسل برقرار رہ سکے۔علاوہ ازیں یورپی یونین کے بر عکس امریکہ نے پاکستان کو ٹیکسٹائل پراڈکٹس کی ڈیوٹی فری برآمد کرنے کی اجازت دے دی ہے جس سے پاکستانی ٹیکسٹائل انڈسٹری کو یورپ کے بعد امریکہ میں بھی ہسپتال آئٹمز بارے ٹیکسٹائل پراڈکٹس کی بڑے پیمانے پر برآمدات ہو نے سے پاکستان کی کل برآمدات میں ریکارڈ اضافہ متوقع ہے۔ چین نے اپنی ٹیکسٹائل ملز کو حیران کن طور پر سات لاکھ میٹرک ٹن روئی درآمد کرنے کا کوٹہ جاری کیا ہے جس سے بین الاقوامی منڈیوں میں روئی کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان دیکھا جا رہا ہے۔

قرارداد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -